منگل , 28 جنوری 2020

مچھلی کے تیل کی گولیاں بینائی کیلئے مفید قرار

کراچی : مچھلی کا تیل اور اس کے تیل سے بنی گولیوں کا استعمال آنکھوں کو رات کی تاریکی سے مطابقت کے قابل (بینیائی میں اضافہ) بناتا ہے۔

آنکھوں کی روشنی تیز کرنے کےلیے ڈاکٹروں کی جانب سے برسوں سے مچھلی کے تیل کی گولیاں یا تیل تجویز کی جاتی رہی ہیں البتہ اس کے مفید اور غیر مفید ہونے پر کافی بحث رہی ہے اور طبی ماہرین ہی کی جانب سے اس کے حق اور مخالفت میں نتائج سامنے آتے رہے ہیں۔

طبی ماہرین کی جانب اب اس بات کی تصدیق کی گئی ہے کہ مچھلی کے تیل اور اس سے بنی گولیوں میں فیٹی ایسڈ، ڈوکوسا ہیکسا نوئک ایسڈ (ڈی ایچ اے) موجود ہوتے ہیں جو سرمئی اور ٹونا سمیت دیگر مچھلیوں سے کشید کیا جاتا ہے۔

مچھلی کے تیل کی گولیاں استعمال کرنے سے یا اس کا تیل استعمال کرنے سے کم ہوتی روشنی میں آنکھیں ماحول کے لحاظ سے خود کو منظم کرلیتی ہیں۔

طبی ماہرین کے مطابق ڈی ایچ اے میں اومیگا 3 فیٹی ایسڈ کی بڑی مقدار موجود ہوتی ہے اور انسانی میں یہ کم ہونا شروع ہوتا ہے تو اسے السی کے بیج اور مچھلی کے تیل سے پورا کیا جاتا ہے کیونکہ انسانی جسم اسے نہیں بناتا۔

مچھلی کے تیل سے متعلق برطانیہ کی لوبورو یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے ایک مطالعہ بھی کیا ہے۔

سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ جسم میں فیٹی ایسڈ کی مقدار بڑھنے سے اندھیرے میں بہتر طور پر دیکھنے کی صلاحیت بڑھ جاتی ہے۔

سائنس دانوں نے اس مطالعے کے دوران 19 رضاکاروں کو 4 ہفتے تک مچھلی کے تیل کی 260 ملی گرام اور 780 ملی گرام کی گولیاں کھلائی اور مدھم روشنی میں دیوار پر لکھے نمبر کو پڑھنے کا کہا تو انہوں نے دھندلاہٹ میں بھی دیوار پر لکھے نمبرز کو پڑھ لیا۔

یہ بھی دیکھیں

چین میں مہلک کرونا وائرس کے عالمی سطح پر پھیلنے کا ’’انتہائی‘‘خدشہ ہے: عالمی ادارہ صحت

عالمی ادارہ صحت ( ڈبلیو ایچ او) نے کہا ہے کہ چین میں پائے جانے …