پیر , 24 فروری 2020

ایران کی سرگرمیاں این پی ٹی معاہدے کیخلاف نہیں: چین

بیجنگ:  چینی وزارت خارجہ کے ڈائریکٹر جنرل آرمز کنٹرول نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران کی جوہری سرگرمیاں ہرگز این پی ٹی معاہدے کے خلاف نہیں ہیں.یہ بات "فو سونگ” نے جمعہ کے روز برسلز میں صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.اس موقع پر انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران عالمی جوہری ادارے کے فریم ورک میں سرگرم عمل ہے اور اس نے این پی ٹی معاہدے کی خلاف ورزی نہیں کی ہے.

سونگ نے جوہری معاہدے کے تحفظ پر زور دیا اور کہا کہ ابھی بھی سفارتی کوششوں کی گنجائش موجود ہے اور ایران جوہری ہتھیاروں کے عدم پھیلاؤ ‘این پی ٹی’ معاہدے کی خلاف ورزی نہیں کرتا ہے.انہوں نے کہا کہ چین تمام فریقین سے تنازعات کے خاتمے اور جوہری معاہدے کے تحفظ کے لئے مناسب اقدامات اٹھانے کا مطالبہ کر رہا ہے.انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے اعلان کردیا کہ جوہری معاہدے سے امریکی علیحدگی کا جائزہ لیا جانا چاہیئے لہذا ہم نے یورپی یونین کی سابق چیف کو مئی، آگست اور نومبر میں اس موضوع پر تین خطوط بھیج دیا.یاد رہے کہ چینی وزارت خارجہ کے ترجمان نے حالیہ پریس کانفرنس میں کہا کہ تین یورپی ممالک کی جانب سے تنازعات کے حل کے میکنزم کو فعال بنانا مسائل کو کم کرنے میں مدد نہیں ملتی ہے۔

یہ بھی دیکھیں

امریکی پابندیاں کسی کورونا وائرس سے کم نہیں : ایرانی صدر

ایرانی صدر حسن روحانی نے امریکہ کی نئی پابندیوں کو کورونا وائرس کی نئی قسم …