منگل , 4 اگست 2020

سوشل میڈیا کیلیے نئے قوانین سے متعلق فواد چوہدری کی وضاحت

اسلام آباد: حکومت کے سوشل میڈیا کے لیے نئے قوانین پر وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے کہا کہ یہ فیصلے اقتصادی ہیں سیاسی نہیں۔

سوشل میڈیا کے نئے قوانین کے مطابق تمام عالمی سوشل میڈیا پلیٹ فارمز کی 3 ماہ میں پاکستان میں رجسٹریشن لازمی قرار دی گئی ہے جس کے تحت یوٹیوب، فیس بک، ٹوئٹر، ٹِک ٹاک اور ڈیلی موشن سمیت دیگر تمام کمپنیوں کو 3 ماہ میں رجسٹریشن کرانا ہوگی۔

تمام سوشل میڈیا پلیٹ فارمز کی 3 ماہ میں پاکستان میں رجسٹریشن لازمی قرار، قواعد پر عمل نہ کیا تو 50 کروڑ روپے تک جرمانہ ہوگا، وزارت آئی ٹی کی تصدیق

نئے قواعد کی رو سے تمام سوشل میڈیا کمپنیوں کے لیے 3 ماہ میں اسلام آباد میں اپنا دفتر قائم کرنا لازمی ہو گا جب کہ ان پر پاکستان میں رابطہ افسر تعینات کرنے کی شرط بھی عائد کی گئی ہے۔

وفاقی وزیر فواد چوہدری نے ایک صارف کو جواب دیتے ہوئے اپنی ٹوئٹ میں لکھا کہ یہ (قوانین) کیسے میڈیا کی آزادی کے خلاف ہو گئے؟ اس سے ڈیجیٹل میڈیا اشتہارات روایتی میڈیا کے نسبت زیادہ ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ کوئی ملک فریم ورک کے بغیر پیسے کے پھیلاؤ کا متحمل نہیں ہو سکتا اس لیے سوشل میڈیا پلیٹ فارم سے متعلق حکومتی فیصلہ سیاسی نہیں اقتصادی ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ایران اور قطر کے تعلقات کے فروغ پر تاکید کی

تہران: اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر نے قطر کے امیر کے ساتھ ہونے والی ٹیلی …