ہفتہ , 8 مئی 2021

فضائل زیارت امام حسین علیہ السلام

سیدہ سائرہ بانو

آج ٣ شعبان المعظم ، یومِ ولادت سیدالشہداء امام حسین علیہ السلام ہے ۔ نواسہ رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی آمد کا دن تمام عالمِ اسلام کے لئے باعثِ راحت و مسرت ہے۔محبانِ امام حسین علیہ السلام اس مبارک دن پر جشن کا اہتمام کرتے ہیں، خصوصی محافلِ میلاد کا انعقاد کیا جاتا ہے، دروبام سجتے ہیں، چراغاں ہوتا ہے۔ جشن کا خصوصی اہتمام روضہ امام حسین علیہ السلام پربھی ہوتا ہے۔ زائرین کی بڑی تعدادآپ علیہ السلام کی قبرِ مبارک کی زیارت کے لئے روضہ پر حاضری دیتی ہے لیکن اِس بار زائرین آپ علیہ السلام کے روضہ پر حاضری سے محروم ہیں جس کی وجہ کرونا وائرس کی وبا کا پھیلنا ہے۔ اس محرومی سے قطع نظر ہر شخص امام حسین علیہ السلام کی مقناطیسی شخصیت کے حصار میں ہے، ہر دل آپ علیہ السلام کے لئے ایک خاص کشش کو محسوس کرتا ہے اور یہی کشش آپ کی زیارت کے شوق میں اضافہ کرتی ہے۔ اسی کیفیت و صورتحال کو مدِنظر رکھتے ہوئے ہم امام حسین علیہ السلام کی زیارت کے اجروثواب کے حوالے سے کچھ روایات پیش کریں گے۔

زائرِ حسین علیہ السلام کی فضیلت
امام جعفر صادق علیہ السلام نے مفضل یا جابر سے فرمایا: آپ میں سے جب کوئی سامانِ سفر باندھے اور آنحضرت کی قبر کی زیارت کے لئے آمادہ ہو جائے تو اہلِ آسمان اسے خوشخبری دیتے ہیں، جب وہ گھر کے دروازے سے باہر نکلتا ہے خواہ سوار ہو یا پیدل، اللہ تعالی ایک لاکھ فرشتوں کے ذمہ لگاتا ہے کہ جب تک مرقد مطہر امام حسین علیہ السلام تک نہ پہنچ جائے اُس پر درودوسلام بھیجتے ہیں۔ (۱)

زائرِ حسین علیہ السلام کی ضمانت
رسولِ خدا صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا: اللہ تعالی کی طرف سے ضامن ہوں اور میرے اوپر لازم ہے کی قیامت کے دن اپنے بیٹے حسینؑ کے زائر کی زیارت کروں اور اسے قیامت کی سختیوں اور شدائد سے نجات دلاتے ہوئے اس کا ہاتھ پکڑ کر اسے بہشت میں داخل کروں۔ (۲)
امام حسین علیہ السلام نے فرمایا: جو کوئی اپنی زندگی میں میری زیارت کرے، میں اس کی موت کے بعد اس کی زیارت کے لئے آؤں گا۔ اگر وہ آگ (جہنم) میں ہوگا تو اسے نجات دلاؤں گا۔ (۳)

زائر کے لئے حضرت فاطمہ زہرا سلام اللہ علیہا دعا کرتی ہیں
امام جعفر صادق علیہ السلام نے فرمایا: بیشک فاطمہ بنتِ محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اپنے بیٹے حسینؑ کے زائر کی قبر کے پاس تشریف لے جاتی ہیں اور اس کے گناہوں سے طلبِ مغفرت فرماتی ہیں۔ (۴)

زائر امامؑ روزِ قیامت شفاعت کرے گا
امام جعفر صادق علیہ السلام نے فرمایا: امام حسین علیہ السلام کا زائر روزِ قیامت ہزار لوگوں کی شفاعت کرے گا اور اس کی شفاعت ان تمام لوگوں کے بارے میں قبول کی جائے گی جو مستحقِ دوزخ اور دنیا میں اسراف کرنے والے تھے۔ (۵)

رسولِ خداؐ کی زیارت امام حسینؑ کی زیارت ہے
ایک صحابی سے نقل ہوا ہے: جو پسند کرتا ہے کہ سکرات موت اور روزِ قیامت مواقف آسان ہو، پس وہ امام حسین علیہ السلام کی زیارت کے لئے بہت زیادہ جائے، کیونکہ حضرت امام حسین علیہ السلام کی زیارت کرنا رسولِ خداؐ کی زیارت کرنا ہے۔ (۶)

یہ خوبصورت روایات محبان اہلِ بیت علیہم السلام کے لئے امید اور دوا سے کم نہیں ۔ آج ہم امام حسین علیہ السلام کے خالی حرم کو دیکھ کر افسردہ ہیں لیکن ہمیں یقین ہے کہ امامؑ کی زیارت سے محرومی عارضی ہے، بہت جلد حالات بہتر ہو جائیں گے اور امامؑ کے روضہ پر زائرین کی آمدورفت کا سلسلہ دوبارہ شروع ہو جائے گا۔ امام حسین علیہ السلام کی ولادت کے حوالے سےان کی بےمثال قربانی کو یاد رکھنا بھی ضروری ہے۔ اہلِ دین پر لازم ہے کہ ان امور کی حفاظت کے لئے قیام کرے جو امرِ الہی کے فروغ اور سیرتِ معصومین علیہم السلام کے احیاء اور ان کی خوشنودی کا سبب ہوں۔
حوالہ جات: (۱) بحارالانوار ج ۱۰۰ ص ۱۶۳
(۲) بحارالانوار ج ۱۰۰ ص ۱۲۳
(۳) الخصائص الحسینیہ ص ۱۶۵
(۴) بحارالانوار ج ۱۰۱ ص۵۵
(۵) ، (۶) بحارالانوار ج ۱۰۱ ص۷۷

یہ بھی دیکھیں

قاسم سلیمانی اور مکتب مقاومت

مقدمہ: شہداء کے سردار کی عظیم شخصیت کے بارے میں کچھ لکھنا بہت دشوار ہے …