بدھ , 8 جولائی 2020

یوم القدس منانے والے عالمی عزم کے سامنے کورونا وائرس اور لاک ڈاون بے بس ہو گیا

تہران: فلسطین سے محبت کرنے والوں کے سائبر سپیس میں یوم قدس منانے کے منصوبوں سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ کرونا وائرس اور لاک ڈاون بھی عالمی یوم القدس کو منانے میں رکاوٹ حائل نہیں کر سکیں۔رمضان المبارک کا آخری جمعہ قریب آرہا ہے اور عالمی یوم قدس منایا جارہا ہے لیکن اب دنیا بھر کے متعدد افراد کو لاک ڈاون اور کرونا وائرس کے پھیلاؤ کی وجہ سے  گھر ہی میں رہنا ہوگا؛ اس وقت فلسطین سے محبت کرنے والے سوشل میڈیا پر ہیش ٹیگ پوسٹ کرنے اور ورچوئل محفلوں کے انعقاد سے عالمی یوم القدس کو منانے کا بند و بست کر رہے ہیں۔

 اس حوالے سے فلسطین سے متحد 100 سے زائد بین الاقوامی تنظیموں نے 22 مئی کو سیاسی شخصیات، میڈیا اور سول سوسائٹی کے کارکنوں کی شرکت سے ایک آن لائن پروگرام منعقد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس آن لائن پروگرام فیس بک اور یوٹیوب پر براہ راست نشر کیا جائے گا۔اس کے علاوہ کینیڈا میں رہائش پذیر فلسطین سے محبت کرنے والوں نے کرونا وائرس کے خلاف جنگ کی وجہ سے اجتماعات پر پابندی کے باوجود، رواں ہفتےکے اتوار کو ایک ورچوئل اجتماع میں 12 مقررین کی تقریر سن لیا جس میں امریکی سیاسی کارکن اور غزہ تحریک کے بانی "پاول لارودی” بھی شامل تھے۔

اس ورچوئل کانفرنس میں "فلسطین کو آزاد کریں، بیت المقدس کو آزاد کریں، دنیا کو آزاد کریں” اور "یہودیت کا اتفاق ، صہیونیت کی مخالفت” کے نعرے بھی لگائے گئے۔دوسری طرف، کچھ سائبر سپیس صارفین نے اگلے جمعہ کو ایک مخصوص وقت پر فلسطینی عوام کی حمایت میں پوسٹ کرتے ہوئے ہیش ٹیک AlQudsDay۲۰۲۰،ِ #FlyTheFlag، #LongLivePalestine# کی ٹرینڈینگ کا فیصلہ کیا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

امریکا میں کورونا وائرس کے خوفناک پھیلاو کے ذمہ دار ٹرمپ ہے؛گورنر نیویارک

واشنگٹن: نیویارک کے گورنر نے اپنی پریس کانفرنس میں کورونا وائرس کے مقابلے میں ٹرمپ …