منگل , 26 مئی 2020

بھارت میں ایک دن میں 6 ہزار سے کورونا کیسسز زائد کیسز رپورٹ

بھارت میں ایک دن میں کورونا وائرس کے ریکارڈ 6 ہزار 88 نئے کیسز رپورٹ ہونے کے بعد متاثرین کی مجموعی تعداد ایک لاکھ 18 ہزار 447 ہوگئی۔ٹائمز آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق بھارت کی 11 ریاستوں میں ایک ہی دن میں 6 ہزار سے زائد کیسز رپورٹ ہوئے۔رپورٹ کے مطابق سب سے زیادہ 2 ہزار 187 کیسز مہاراشٹرا میں درج ہوئے۔

علاوہ ازیں مہاراشٹرا میں اموات کی تعداد دیگر ریاستوں کے مقابلے میں کہیں زیادہ ہے جہاں اب تک ایک ہزار 454 افراد وائرس سے ہلاک ہوچکے ہیں۔دوسری جانب اے پی کے مطابق بھارت میں وبائی امراض کے باعث ہلاکتوں کی تعداد بڑھ کر 3 ہزار 583 ہوگئی۔وزارت صحت کے اعداد و شمار کے مطابق 48 ہزار سے زائد افراد وائرس سے صحتیاب ہوگئے۔دوسری جانب ملائیشیا میں بھی وائرس کے نئے کیسز بتدریج سامنے آرہے ہیں۔محکمہ صحت کے مطابق ملائیشیا میں نئے 78 کیسز کی اطلاع کے بعد وہاں مجموعی طور پر وائرس سے متاثرین کی تعداد 7 ہزار 137 ہوگئی ہے۔

علاوہ ازیں وزارت صحت کے مطابق ایک نئی ہلاکت کے بعد مجموعی جاں بحق افراد کی تعداد 115 ہو گئی۔متحدہ عرب امارات (یو اے ای) میں 894 نئے کیسز کے بعد متاثرین کی مجموعی تعداد 26 ہزار 898 ہوگئی۔دوسری جانب دبئی چیمبر آف کامرس کے ایک سروے کے مطابق دبئی کورونا وائرس کی وجہ میں تقریباً 70 فیصد کاروبار اگلے 6 ماہ کے اندر بند رہنے کی توقع ہے۔سیاحت اور ٹریول کے شعبے کی تمام کمپنیوں، ریل اسٹیٹ، ہوٹلوں اور ریسٹورنٹ کمپنیوں اور چھوٹے بڑی دکانوں کے مالکان نے توقع ظاہر کی کہ گزشتہ کے مقابلے میں دوسری سہ ماہی میں کاروباری سرگرمیوں میں 75 فیصد سے زیادہ کمی ہوگی۔اگر ایران کی بات کی جائے تو وہاں بھی وائرس کے کیسز منظر عام آرہے ہیں۔ایران کے وزارت صحت کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران وائرس کی وجہ سے مزید 51 ایرانیوں کی موت ہوگئی۔انہوں نے بتایا کہ وائرس سے جاں بحق ہونے والوں کی تعداد 7 ہزار 300 تک پہنچ گئی۔

وزارت صحت کے مطابق کل سے اب تک 2 ہزار 311 نئے کیسز رپورٹ ہوئے جبکہ 2 ہزار 659 متاثرین کی حالات تشویشناک ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ ایران میں اب تک 7 لاکھ 63 ہزار 913 ٹیسٹ کیے جاچکے ہیں۔واضح رہے کہ گزشتہ روز ایران نے رمضان کے بعد تمام مذہبی مقامات کھولنے کا اعلان کیا تھا۔ایران کی حکومت نے کورونا وائرس کے سیکڑوں نئے کیسز سامنے آنے کے باوجود عیدالفطر کے بعد تمام مذہبی مقامات کھولنے کا اعلان کردیا تھا۔علاوہ ازیں برطانوی محکمہ صحت کے سیکرٹری میٹ ہینکوک نے کہا کہ تقربیاً 17 فیصد لندن کے شہریوں جبکہ ملک کے باقی حصوں میں 5 فیصد افراد کورونا وائرس کا شکار ہیں۔

انہوں نے ایک تحقیق کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ بڑے پیمانے پر عوام کو یہ جاننے کے لیے کہ ان میں کورونا وائرس ہے یا نہیں، انہیں بڑے پیمانے پر اینٹی باڈی ٹیسٹ کی ضرورت ہے۔واضح رہے کہ برطانیہ میں گزشتہ 24 گھنٹے کے دوران 3 ہزار سے زائد کیسز منظر عام پر آنے کے بعد وہاں مجموعی تعداد 2 لاکھ 54 ہزار سے زائد ہوگئی ہے۔علاوہ ازیں اس دورانیے میں 351 اموات ریکارڈ کی گئی جس کے بعد مجموعی اموات 36 ہزار 393 ہوگئی۔

 

یہ بھی دیکھیں

آل سعود اپنے کئے کی سزا ضرور بھکتیں گے: حزب اللہِ عراق

حزب اللہِ عراق کے انٹیلی جینس چیف نے اپنے ملک میں دہشت گردوں کے لئے …