پیر , 1 مارچ 2021

شامی طیاروں کی فضائی کارروائی میں دہشتگرد تنظیم جیش الاسلام کا سربراہ ہلاک

شام کے اہم شہر دمشق میں شامی طیاروں کی بمباری کے نتیجے میں دہشتگرد عسکری تنظیم جیش الاسلام کے سربراہ کے ہلاک ہونے کی اطلاعات ہیں۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق شامی طیاروں نے دمشق میں فضائی کارروائی کی، جس کے نتیجے میں عسکری تنظیم جیش الاسلام کے سربراہ زھران علوش ہلاک ہوگئے۔ جیش الاسلام دمشق کے شمالی علاقے غوطہ پر قابض عسکریت پسندوں کی اہم تنظیم تصور کی جاتی ہے۔ انسانی حقوق کے لئے کام کرنے والی ایک شامی تنظیم کا کہنا ہے کہ زھران علوش اور تنظیم کے دیگر 5 کمانڈرز کو مشرقی غوطہ کے علاقے میں ایک اجلاس کے دوران نشانہ بنایا گیا۔ جیش الاسلام کے ایک سینیئر رکن نے علوش کی ہلاکت کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ 3 طیاروں نے انھیں خفیہ اجلاس کے دوران نشانہ بنایا۔ خیال رہے کہ شامی حکومت اور ریاستی میڈیا مسلسل کئی عرصے سے جیش الاسلام کو دہشت گرد تنظیم قرار دے رہا ہے جبکہ سرکاری ٹی وی نے علوش کی ہلاکت کی اطلاع نیوز الرٹ کے طور پر دی۔ شام کی سرکاری فوج کے کمانڈر نے سرکاری ٹی وی پر جاری بیان میں ایک "خصوصی آپریشن” کے دوران زھران علوش کی ہلاکت کا اعلان کیا۔ ادھر شامی سکیورٹی فورسز نے تصدیق کی ہے کہ روس کی جانب سے فراہم کردہ نئے میزائلوں کی مدد سے شامی طیاروں نے مختلف حملوں میں درجنوں شامی باغیوں کو نشانہ بنایا ہے۔ ذرائع کے مطابق شامی طیاروں نے خفیہ اجلاس کے مقام پر دو بار فضائی کارروائی کی، جس دوران ہر بار 4 میزائل گرائے گئے۔ حملے میں جیش الاسلام کے 12 اراکین اور احرار الاسلام کے 7 اراکین ہلاک ہوئے۔

یہ بھی دیکھیں

شام پر حملہ کرنے والے اسرائیلی میزائل تباہ

شامی فوج نے صوبہ حماہ کی فضا میں اسرائیل کے میزائلی حملوں کو ناکام بنا …