بدھ , 8 جولائی 2020

الحشد الشعبی کا حکومت سے بڑا مطالبہ ایک بھی امریکی فوجی کو عراق میں نہیں رہنا چاہیئے

عراق کی رضاکار فورس الحشد الشعبی کی سید الشہداء بریگیڈ نے ملک میں امریکی فوجیوں کی موجودگی کی شدید مخالفت کی ہے۔ عراقی رضاکار فورس الحشد الشعبی کی سید الشہداء بریگیڈ کے سینئر کمانڈر اور سربراہ ابو آلاء الولائی واشنگٹن اور بغداد کے درمیان مذاکرات کے وقت کے نزدیک آنے پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ عراق میں ایک بھی امریکی فوجی نہ رہنے پائے۔ انہوں نے جمعرات کو کہا کہ عراقی مذاکرات کاروں کو شہداء کے خون اور ان کے اہل خانہ کے احترام کو مد نظر رکھنا چاہئے۔ ابو آلاء الولائی کے مطابق مذاکرات کاروں کو عراق سے تمام امریکی فوجیوں کے انخلا پر تاکید کرنی چاہئے۔

عراقی رضاکار فورس الحشد الشعبی کی سید الشہداء بریگیڈ کے سینئر کمانڈر اور سربراہ نے کہا کہ عراق میں مزاحمتی گروہ، اس مذاکراتی عمل پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ان گروہوں کو امید ہے کہ عراق سے تمام ہی امریکی فوجیوں کا انخلاء ہو جائے۔ ابو آلاء الولائی نے کہا کہ اگر ایسا نہیں ہوا تو ہم خاموش نہیں بیٹھيں گے۔

واضح رہے کہ عراق سے امریکی فوجیوں کے انخلا کے بارے میں جون سے امریکا اور عراق کے درمیان مذاکرات ہونے جا رہے ہیں۔ سیکورٹی اور فوجی لحاظ سے مذکورہ مذاکرات کو بہت ہی اہم تصور کیا جا رہا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ عراقی رضاکار فورس الحشد الشعبی اپنے کاموں کی وجہ سے عراق میں کافی محبوب اور شہرت یافتہ ہے۔ الحشد الشعبی میں مختلف بریگیڈز ہیں اور انہیں میں سے ایک سید الشہداء بریگیڈ بھی ہے۔

یہ بھی دیکھیں

صوابی میں اشتہاری ملزمان سے مقابلے میں ڈی ایس پی شہید

صوابی اشتہاری ملزمان سے مقابلے میں ڈپٹی سپرٹنڈنٹ پولیس (ڈی ایس پی) علامہ اقبال شہید …