اتوار , 9 اگست 2020

اسلام آباد ہائیکورٹ نے مندر کی تعمیر کے حوالے سے فیصلہ سنا دیا

اسلام آباد: ہائی کورٹ نے کہا ہے کہ وفاقی دارالحکومت میں مندر کی تعمیر کے معاملے میں مداخلت کی کوئی بنیاد موجود نہیں۔ابلاغ نیوز نے ایکسپریس نیوز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ گزشتہ اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس عامر فاروق نے وفاقی دارالحکومت میں مندر کی تعمیر کے خلاف درخواستوں پر سماعت کی اور عدالت نے فریقین کے دلائل مکمل ہونے کے بعد فیصلہ فیصلہ محفوظ کرلیا تھا جو آج جاری کردیا گیا ہے، عدالت نے فیصلے میں کہا ہے کہ وفاقی حکومت کا مؤقف ہے کہ ابھی تک مندر کی تعمیر کے لیے کوئی فنڈنگ نہیں کی، مندر کی تعمیر کی فنڈنگ کے لیے اسلامی نظریاتی کونسل سے حکومت نے رائے مانگی ہے، عدالت کے سامنے فنڈنگ کے معاملے پر موجود درخواست ابھی غیر موثر ہو گئی ہے۔

فیصلے میں کہا گیا ہے کہ سی ڈی اے نے بلڈنگ پلان نہ ہونے کی وجہ سے مندر کی تعمیر رکوا دی ہے، تعمیرات سی ڈی اے کے قوانین کے مطابق ہی ہو سکتی ہیں، سی ڈی اے اپنے قوانین کی روشنی میں غیر قانونی تعمیرات رکوا سکتا ہے اور ان کے خلاف کارروائی کا اختیار رکھتا ہے ، سی ڈی اے کے مطابق مندر کی تعمیر ابھی شروع ہی نہیں ہوئی، مندر کی نہ تو تعمیر ہوئی اور نہ ہی کوئی فنڈنگ ہوئی، عدالت کے سامنے اس معاملے میں مداخلت کی کوئی بنیاد موجود نہیں۔ عدالت نے ہدایات کے ساتھ مندر کی تعمیر کے خلاف درخواستوں کو نمٹا دیا

یہ بھی دیکھیں

بھارتی وزیر اعظم نے اپنے حلف کی خلاف ورزی کی ہے : اسد الدین اویسی

سری نگر: آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین کے سربراہ اسد الدین اویسی نے کہا ہے …