جمعہ , 30 اکتوبر 2020

مصرمیں والد کے ظلم کا شکار زنجیروں کی جکڑی بچی گھر سے برآمد

مصر میں ایک سفاک والد نے اپنی 12 سالہ بچی کو گھر میں زنجیروں میں قید رکھنے کے ساتھ ساتھ اسے ہولناک تشدد کا نشانہ بنایا جس پر پولیس کو مداخلت کرنا پڑی۔عرب ٹی وی کے مطابق مصر میں بچوں کی دیکھ بحال کے لیے قائم کردہ کونسل نے کہاکہ یہ واقعہ مصر کی القلیوبیہ گورنری کے قلیوب شہر میں پیش آیا جہاں ایک شخص نے اپنی ہی ایک گیارہ سالہ بچی کو تشدد کا نشانہ بنایا۔ محلے داروں اور پڑوسیوں نے بتایا کہ ایک شخص نے اپنی کم سن بچی گھر میں زنجیروں میں قید کر رکھی تھی اور وہ اپنی بیوی کے ساتھ مل کر اسے تشدد کا نشانہ بنا رہا تھا۔ بچی کی چیخ پکار سن کر پڑوسیوں نے پولیس کو اطلاع دی۔پولیس نے چائلڈ کیرئنگ کونسل کے ذمہ داران کے ساتھ گھر پرچھاپہ مارا اور زنجیروں میں جکڑی بچی بازیاب کرنے کے ساتھ اس کے والد کو گرفتار کرلیا ہے۔ ائلڈ کیئرنگ کونسل کی سیکرٹری جنرل سحر السنباطی نے بتایا کہ بچی کو بازیاب کرانے کے بعد اسے ضروری طبی امداد فراہم کی گئی ہے جب کہ بچی کو پولیس کی نگرانی میں رکھا گیا ہے۔ اس کے ساتھ سفاک والد کے خلاف پراسیکیوٹر کی عدالت میں قانونی کارروائی شروع کردی گئی ہے۔پولیس کا کہنا تھا کہ تشدد کا شکار ہونے والی بچی کی ماں شوہر سے الگ ہو گئی تھی جس کے بعد اس شخص نے ایک اور خاتون سے شادی کی۔ اس طرح وہ دوسری بیوی کے ساتھ مل کر بچی پر ظلم کرتا رہا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

یہ دنیا کی ’سب سے سیاہ‘ مچھلی ہے

لاس اینجلس: امریکی سائنسدانوں کی ایک ٹیم نے سمندر کی اتھاہ و تاریک گہرائیوں سے …