پیر , 30 نومبر 2020

امریکہ میں سیاہ فام لڑکی کی ہلاکت کے خلاف مسلح احتجاج

واشنگٹن: امریکہ میں سیاہ فام لڑکی کی ہلاکت کے خلاف مسلح احتجاج کیا گیا۔ابلاغ نیوز نے غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا ہے کہ جدید اسلحے سے لیس مظاہرین نے کینکٹی کٹ کے شہر لیوس ویلے میں احتجاجی مارچ کیا اور احتجاج کے دوران غلطی سے گولی چلنے سے 3 افراد زخمی بھی ہو گئے۔دوسری جانب مارچ کو روکنے کے لیے سفید فام امریکیوں نے بھی ہتھیار اٹھا لیے تاہم دونوں گروپس کو علیحدہ رکھنے کے لیے پولیس کی بھاری نفری تعینات رہی۔

واضح رہے کہ 26 سالہ بریوناٹیلر سفید کپڑوں میں ملبوس اہلکاروں کی فائرنگ سے ہلاک ہوئی تھی۔خیال رہے کہ امریکا سمیت دنیا بھر میں حال ہی میں نسلی تعصب کے خلاف مظاہرے گزشتہ ماہ 25 مئی کو اس وقت شروع ہوئے جب امریکی ریاست مینیسوٹا کے شہر مینیا پولس میں پولیس کے ہاتھوں سیاہ فام جارج فلائیڈ کی ہلاکت ہوئی۔جارچ فلائیڈ کی ہلاکت پولیس کی جانب سے گرفتاری کے وقت اس وقت ہوئی جب ایک سیاہ فام پولیس اہلکار نے 9 منٹوں تک اس کے گلے کو اپنے گھٹنے تلے دبائے رکھا۔

یہ بھی دیکھیں

مقبوضہ کشمیر کی سابق وزیراعلی کو ایک بار پھرحراست میں لے لیا گيا

مقبوضہ کشمیر کی سابق وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی کا کہنا ہے کہ بھارتی فوج نے ایک …