منگل , 13 اپریل 2021

اسرائیلی حکام کا جاسوس سیٹیلائٹ کے ذریعے اعلیٰ معیار کی تصاویر وصول کرنے کا دعویٰ جھوٹا ہے؛ رپورٹ

اسلام آباد: اسرائیلی حکام کا جاسوس سیٹیلائٹ افیک سولہ کے ذریعے اعلیٰ معیار کی تصاویر وصول کرنے کا دعویٰ جھوٹا ہے۔ابلاغ نیوز نے فارس نیوز ایجنسی کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا ہے کہ ایک باخبر ذرائع نے بتایا کہ اسرائیلی حکام کا اس سیٹیلائٹ کے ذریعہ اعلی معیار کی تصاویر وصول کرنا ایک جھوٹا دعوی ہے۔

ایف این اے نے اسرائیل کے 6 جولائی کو لانچ کیے گئے جاسوس سیٹیلائٹ اوفیک ۔16 کے لانچنگ کے حوالے سے بتایا ہے کہ افیک سولہ لانچنگ کے بعد سے اب تک بہت تیز گھوم رہا ہے اور زمین کے ساتھ اس کا کوئی رابطہ نہیں ہوا ہے۔تاہم 6جولائی کو اسرائیل کی حکومت نے اعلان کیا تھا کہ جاسوس سیٹیلائٹ پورے مشرق وسطیٰ کی نگرانی کرےگا ۔ اسرائیل کے وزیر جنگ نے کہا تھا کہ جاسوس سیٹیلائٹ اسرائیل کی ڈیفنس انڈسٹریز کے لیے ایک عظیم اقدام ہے اور اس سیٹیلائٹ کے ذریعے ہر محاذ پر ہر مقام پر اسرائیل کو مضبوط اور مستحکم رکھا جائے گا۔انہوں نے یہ بھی دعویٰ کیا تھا کہ اوفیک 16 جدید ترین صلاحیتوں والا ایک "الیکٹرو آپٹیکل ری اینسی سیٹیلائٹ ” ہے

اُدھر ایف این اے کے مطابق سیٹیلائٹ کی آہستہ گردش کرنے سے سیٹیلائٹ کی بنائی گئی تصاویر صاف ستھری اور واضح ہوتی ہے جبکہ یہ اسرائیلی سیٹیلائٹ بہت تیزی کے ساتھ گردش کررہا ہے اور تیزی سے گردش کرنے کا مطلب یہ ہے کہ یہ سیٹیلائٹ اپنے کام کرنے میں ناکام ہو گیا ہے اور یوں اسرائیلی حکام کی جانب سے کیا گیا دعویٰ جھوٹا ہے

یہ بھی دیکھیں

ایران و چین معاہدے پر امریکہ چراغ پا

امریکی صدر نے ایران اور چین کے 25 سالہ معاہدے پر سخت تشویش کا اظہار …