جمعرات , 22 اپریل 2021

ایرانی وفد یوکرائنی طیارہ حادثے سے متعلق مزید مذاکرات کیلئے کیف کا دورہ کرے گا

تہران: نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے حقوقی اور بین الاقوامی امور نے کہا کہ ایران میں مارگرائے گئے یوکرائنی طیارے کی ڈی کوڈینگ کا عمل آئندہ تین دنوں میں مکمل ہوگا اور ایرانی وفد اس حوالے سے مزید مذاکرات کیلئے 29 اور 30 جولائی کو کیف کا دورہ کرے گا۔اان خیالات کا اظہار "محسن بہاروند” نے منگل کے روز ارنا نمائندے کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ابلاغ نیوز نے ارنا نیوز کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا ہے کہ نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے حقوقی اور بین الاقوامی امور نے کہا ہے کہ ایران میں مار گرائے گئے یوکرائنی طیارے کی ڈی کوڈینگ کا عمل تین دنوں میں مکمل ہو گا۔انہوں نے مزید کہا کہ ایک ایسے ملک کی حیثیت سے جہاں یہ ناگوار واقعہ رونما ہوا ہم نے بین الاقوامی اور ساتھ ہی ایرانی قوانین کے مطابق اپنے فرائض سرانجام دیے ہیں۔

بہاروند نے یوکرائنی طیارے حادثے کے لواحقین کے نقصانات کا ازالہ کرنے اور ان کو معاوضہ دینے سے متعلق کہا کہ ہم نے اس حوالے سے کوئی تجویز نہیں دی ہے اور ہم بین الاقوامی قوانین کے مطابق اقدامات اٹھائیں گے جبکہ یہ اس طرح کا پہلا واقعہ نہیں ہے لہذا بین الاقوامی کنونشنوں میں اس حوالے سے رقوم کا تعین کیا گیا ہے اور ساتھ ہی انسورنش سے متعلق بھی ہمیں اقدامات اٹھانا ہے تو ہم جس چیز پر اتفاق کریں گے اس کو اس سلسلے میں موجود بین الاقوامی رواج سے بہت دور نہیں کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ اس حادثے میں ملوث افراد کا گرفتار کیا گیا ہے اور ساتھ ہی قانونی کاروائی کا سلسلہ جاری ہے ویسے ہم ابھی انویسٹیگیشن کے مرحلے میں ہیں۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ 8 جنوری 2020ء کو ایران کی جانب سے عراق میں امریکی فوجی اڈوں پر میزائل حملے ختم ہونے کے کچھ گھنٹے بعد یوکرین کا طیارہ ایران کے امام خمینی ائیرپورٹ کے قریب گر کر تباہ ہوگیا جس میں سوار 167 مسافر اور 9 عملے جاں بحق ہوگئے تھے۔ایرانی مسلح افواج اندرونی تحقیقات کے بعد اس نتیجے پر پہنچیں کہ میزائل انسانی غلطی کی وجہ سے فائر ہوا جس کے نتیجے میں یوکرائنی طیارہ تباہ ہوا، اور معصوم لوگ جاں بحق ہوگئے۔

یہ بھی دیکھیں

میزائل تجربے پر تنقید : شمالی کوریا نے اقوام متحدہ پر چڑھائی کردی

شمالی کوریا نے میزائل ٹیسٹ کے بعد پابندیوں کی تجویز پر اقوام متحدہ پر چڑھائی …