منگل , 13 اپریل 2021

امریکی اتحاد کے زیرکنٹرول علاقوں میں داعش کے جرائم میں شدت

دمشق: شام کے ہیومن رائٹس واچ سینٹر نے اعلان کیا ہے کہ شام و عراق کی مشترکہ سرحدوں کے قریب امریکی اتحاد کے زیرکنٹرول علاقوں میں داعش دہشتگرد عناصر کے جرائم بڑھ گئے ہیں۔

شام کے ہیومن رائٹس واچ سینٹر نے منگل کو اپنے ایک بیان میں اعلان کیا ہے کہ داعش کے عناصر نے صوبہ دیرالزور کے شیوخ اور قبائلی عمائدین کو راستے سے ہٹانے کی کارروائیاں شروع کر دی ہیں اور اہم شخصیات کو قتل کر رہے ہیں۔شام کے ہیومن رائٹس واچ نے اپنے بیان میں مزید کہا کہ دہشتگرد عناصر نے دیرالزور، الحسکہ اورالرقہ کے مضافاتی علاقوں میں چودہ بچوں اور آٹھ خواتین سمیت کم سے کم ایک سو ستاسی عام شہریوں کو گولی مار کر قتل کیا ہے۔یہ علاقے نام نہاد داعش مخالف امریکی اتحاد سے وابستہ کرد سیرین ڈیموکریٹک فورسس کے زیر کنٹرول ہیں ۔

شام میں روس کے آشتی سینٹر کے سربراہ الکزینڈر اشچر بیتسکی نے بھی کہا ہے کہ شامی فوج اب تک صوبہ ادلب کے حمرات دیہات میں شامی فوج کے ٹھکانوں پر جبھۃ النصرہ دہشتگرد گروہ کے کئی حملے پسپا کر چکی ہے اور انھیں کافی نقصان پہنچایا ہے۔درایں اثنا شامی ذرائع ابلاغ نے شمال مغربی صوبہ لاذقیہ کے شمالی مضافات میں دہشتگردوں کا حملہ ناکام بنا دینے کی خبر دی ہے ۔شامی ذرائع ابلاغ نے اعلان کیا ہے کہ شامی فوجیوں نے صوبہ لاذقیہ کے شمالی مضافاتی علاقے میں دہشتگردوں کا حملہ ناکام بناتے ہوئے انھیں پسپائی اختیار کرنے پر مجبور کردیا ۔شامی ذرائع ابلاغ کی رپورٹوں کے مطابق دہشتگردوں کے ساتھ شامی فوج کی جھڑپ میں دسیوں دہشتگرد ہلاک ہوئے ہیں ۔

یہ بھی دیکھیں

ایران و چین معاہدے پر امریکہ چراغ پا

امریکی صدر نے ایران اور چین کے 25 سالہ معاہدے پر سخت تشویش کا اظہار …