جمعہ , 23 اپریل 2021

مقبوضہ بیت المقدس میں صہیونی حکومت کا اضافی مکانات کی تعمیر کا پلان

صیہونی حکومت غرب اردن میں نئی یہودی کالونیوں کا پلان بنا رہی ہے۔

صیہونی اخباری ذرائع کے مطابق تل ابیب نے جوبائیڈن کے اقتدار سنبھالنے سے پہلے مشرقی بیت المقدس میں ایک ہزار سے زيادہ نئے گھروں کی تعمیر کا منصوبہ بنایا ہے۔

اس منصوبے کے تحت مشرقی بیت المقدس میں واقع مقبوضہ کالونی ” گیوات ہاماتوس”  میں نئے مکانات تعمیر کئے جائيں گے۔ یہ علاقہ 1967 کی جنگ کے بعد صیہونی حکومت کے قبضے میں آیا ہے۔

اسرائیل نے  سنہ 2014 میں اسی علاقے میں 2600 مکانات کی تعمیر کا منصوبہ بنایا تھا تاہم بڑے پیمانے پر عالمی مخالفت کے بعد منصوبے پر عمل درآمد روک دیا گیا تھا۔

ترکی کی نیوز ایجنسی شفق نے بھی خبر دی ہے کہ صیہونی حکومت جوبائیڈن کے اقتدار میں آنے سے پہلے مقبوضہ علاقوں ميں ہزاروں گھروں کی تعمیر کے منصوبوں پر عمل درامد کی منظوری لینا چاہتی ہے۔

جوبائیڈن کے بارے میں عام خیال یہ پایا جاتا ہے کہ وہ مقبوضہ علاقوں میں نئی یہودی بستیوں کی تعمیر اور غرب اردن کے الحاق کے مخالف ہيں۔

یہ بھی دیکھیں

ایران و چین معاہدے پر امریکہ چراغ پا

امریکی صدر نے ایران اور چین کے 25 سالہ معاہدے پر سخت تشویش کا اظہار …