اتوار , 6 دسمبر 2020

فلسطینی خاتون صحافی کو 4 ماہ قید کی سزا

صیہونی فوجی عدالت نے فلسطینی خاتون صحافی اور سماجی کارکن کو بغیر کسی جرم کے 4 ماہ قابل تجدید انتظامی قید کی سزا سنائی ہے۔

فلسطینی میڈیا ذرائع کے مطابق غرب اردن کےوسطی شہر رام اللہ میں البیرہ کے علاقے سے تعلق رکھنے والی حماس کے مقامی رہنما جمال الطویل کی صاحبزادی اور فلسطینی سینئر خاتون صحافی بشریٰ الطویل کو صیہونی فوجی عدالت نے بغیر کسی جرم کے چار ماہ کیلئے قابل تجدید انتظامی حراست کی غیر قانونی پالیسی کے تحت کی سزا سنائی ہے۔

بشریٰ‌ طویل کو قابض فوج نے 9 نومبر کو جنوبی بیت المقدس میں یتسھار روڈ پر ایک چوکی سے گذرتے ہوئے گرفتار کرلیا گیا تھا۔یہ بشریٰ‌کی پہلی گرفتاری نہیں بلکہ اسے رواں سال جولائی میں 8 ماہ کی انتظامی قید کے بعد رہا کیا گیا تھا۔سنہ 2011ء کے بعد اسے 16 ماہ قید کی سزا سنائی گئی جب کہ سنہ 2014ء میں اسے دوبارہ گرفتار کرکے 10 ماہ کے لیے پابند سلاسل کیا گیا تھا۔

یہ بھی دیکھیں

فرانس کو بہت جلد صدر میکرون کے شر سے نجات مل جائے گی ، ترک صدر

ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان نے امید ظاہر کی ہے کہ فرانس کے عوام …