جمعرات , 15 اپریل 2021

ایران اور شام مل کر ادلب کے قیام امن کے لئے کوشش جاری رکھیں گے

ایرانی وزیر خارجہ کے معاون خصوصی برائے سیاسی امور نے کہا کہ مغربی ملکوں نے شام کے انسان دوستانہ مسائل کو سیاسی رنگ دے کر دمشق میں شامی پناہ گزینوں سے متعلق کانفرنس کے انعقاد کو روکنے کی کوشش کی۔

ان خیالات کا اظہار "علی اصغر خاجی” نے آج بروز ہفتے کو ایران کے دورے پر آئے ہوئے اقوام متحدہ کے خصوصی نمائندے برائے شامی امور "گیر۔ او۔ پدرسن” کیساتھ ایک ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا

اس اجلاس میں دونوں فریقین نے شامی کی تازہ ترین تبدیلیون بشمول شام کی آئین ساز کمیٹی، پناہ گزینوں سے متعلق کانفرنس، ادلب اور مشرقی فرات کے علاقوں پر تبادلہ خیال کیا۔

اس موقع پر خاجی نے شامی مسئلے کے سیاسی حل سمیت شام کی آئین ساز کمیٹی سے متعلق اجلاسوں کے مسلسل انعقاد کیلئے پدرسن کی کوششوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے مغربی ممالک کیجانب سے شامی پناہ گزینوں کی کانفرنس کے انعقاد میں روڑے اٹکانے کی تنقید کی۔

انہوں نے مزید کہا کہ انسانی حقوق کے دعویدار مغربی ملکوں نے شام کے انسان دوستانہ مسائل کو سیاسی رنگ دے کر شامی پناہ گزینوں کی کانفرنس کے انعقاد کو روکنے کی کوشش کی۔

منعقدہ اس اجلاس میں علاقے ادلب کی تازہ ترین صورتحال کا جائزہ لیا گیا اور دونوں فریقین نے اس امید کا اظہار کرلیا کہ معاہدوں کے نفاذ سے ادلب میں قیام امن کا انعقاد ہوگا۔

اس موقع پر اقوام متحدہ کے نمائندے برائے شامی امور نے شام کی تازہ ترین تبدیلیوں پر گفتگو کرتے ہوئے شامی مسئلے کے سیاسی حل کیلئے ایرانی کوششوں کا شکریہ ادا کیا۔

یہ بھی دیکھیں

ایران و چین معاہدے پر امریکہ چراغ پا

امریکی صدر نے ایران اور چین کے 25 سالہ معاہدے پر سخت تشویش کا اظہار …