جمعرات , 15 اپریل 2021

اسرئیلی حکام کی عرب رہنماوں کے ساتھ ملاقاتیں کہاں اور کیسے ہوتی تھیں ؟ سابق موساد چیف نے سب بتا دیا

اسرائیلی خفیہ ایجنسی موساد کے سابق سربراہ ڈینی تاتوم نے انکشاف کیا ہے کہ اسرائیل کے سابق وزرائے اعظم عرب رہنماؤں سے باقاعدگی کیساتھ برقع پہن کر خفیہ ملاقاتیں کرتے رہے ہیں

اسرائیلی ریڈیو سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا جن عرب رہنماؤں کیساتھ اس قسم کی ملاقاتیں کی گئیں، ان میں شام کے سابق وزیر خارجہ ولید معلم ، اردن کے مرحوم شاہ حسین اور ان کے بھائی شہزادہ حسن شامل ہیں، ایسی ملاقاتیں دنیا کی نظروں سے دور رکھنے کیلئے رات گئے کی جاتی تھیں.

انہوں نے بتایا کہ ایک موقع پر سابق وزیر اعظم اسحق رابن نے انہیں اور چیف آف سٹاف ایہود باراک کو شام کے وزیر خارجہ ولید معلم اور چیف آف سٹاف حکمت شہابی سے ملاقات کیلئے واشنگٹن بھیجا جس کا مقصد ممکنہ امن مذاکرات پر بات چیت کرناتھا، ایہود باراک اور انہوں نے یہ ملاقات خواتین کے بھیس میں کی جس کیلئے انہوں نے وگ اور زنانہ کپڑے پہنے اور وہ کمرشل فلائٹ سے واشنگٹن گئے ۔

شہزادہ محمد بن سلمان کیساتھ اسرائیلی وزیراعظم کی ملاقات کو سراہتے ہوئے انہوں نے کہا جزیرہ نما عرب کا سب سے بڑا ملک اور مسلم دنیا کا رہنما ہونے کے باعث سعودی عرب اسرائیلی کیلئے تزویراتی لحاظ سے بہت اہمیت کا حامل ہے ۔ اس ملاقات میں اہم کردار ادا کرنے والے ہرشخص کے وہ شکرگزار ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

ایران و چین معاہدے پر امریکہ چراغ پا

امریکی صدر نے ایران اور چین کے 25 سالہ معاہدے پر سخت تشویش کا اظہار …