منگل , 15 جون 2021

عظیم سائنسدان کے قتل پر اقوم متحدہ ردعمل دکھائے ، ایران

جنیوا میں اسلامی جمہوریہ ایران کے سفیر اور مستقل نمائندے نے ایران کے ممتاز سائنسدان کے قتل پر اقوام متحدہ سے فیصلہ کن ردعمل دکھانے کا مطالبہ کیا ہے۔

جنیوا میں اسلامی جمہوریہ ایران کے سفیر اور مستقل نمائندے اسماعیل بقایی ہامانہ نے آج اقوام متحدہ کی اعلی کمشنر برائے انسانی حقوق مشیل باشلٹ کو لکھے گئے ایک خط میں ایران کے پر امن ایٹمی پروگرام کے بانی سائنسدان سید محسن فخری زادہ کی صیہونی حکومت کے ہاتھوں شہادت اور اس گھناؤنے اقدام میں ملوث ہونے کے شواہد اور دستاویزات کا حوالہ دیتے ہوئے اس اقدام کو بین الاقوامی قانون ، انسانی حقوق اور تمام اخلاقی اقدار کی سنگین خلاف ورزی قرار دیا۔

انہوں نے اس خط میں ریاستی دہشت گردی کو قانون کی حکمرانی اور بین الاقوامی امن و سلامتی کیلئے خطرناک قراردیا۔

واضح رہے کہ جعمہ27 نومبر کو ایران کے دارالحکومت تہران کے قریب دماوند میں صیہونی حکومت سے وابستہ دہشتگردوں نے ایران کے پر امن ایٹمی پروگرام کے بانی سائنسدان محسن فخری زادہ کی گاڑی کے قریب دھماکہ کیا جس کے نتیجے میں سائنس دان محسن فخری زادہ شدید زخمی ہوگئے، اُنہیں قریبی اسپتال منتقل کیا گیا تاہم وہ جانبر نہ ہوسکے اور شہادت کے عظیم مرتبے پر فائز ہوئے۔

یہ بھی دیکھیں

کابل میں پھر دھماکے، آٹھ افراد جاں بحق، شیعہ ہزارہ نشانے پر

کابل: افغانستان کے دارالحکومت میں جمعرات کو ہونے والے دو الگ الگ بم دھماکوں میں …