جمعہ , 23 اپریل 2021

ملائیشیاء کے وزیر برائے سماجی امور کرپشن کے الزام میں گرفتار

ملائشیا میں وبا کے دوران مستحق افراد میں امدادی سامان کی فراہمی کے پروجیکٹ میں سپلائرز سے 12 لاکھ ڈالر رشوت لینے کے الزام پر وزیر سماجی امور نے گرفتاری دیدی۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق ملائیشیا کے سماجی امور کے وزیر جولیاری باتوبارا نے انسداد کرپشن کمیشن کے ہیڈ کوارٹر پہنچ کر خود کو تفتیشی افسران کے حوالے کردیا۔ وزیر پر رشوت خوری کا الزام ثابت ہوگیا تو انہیں عمر قید کی سزا ہوسکتی ہے۔

اس سے قبل انسداد بدعنوانی کے محکمے کے افسران نے پریس کانفرنس کرکے حکمراں جماعت سے تعلق رکھنے والے وزیر برائے سماجی امور اور دو اعلیٰ افسران پر وبا کے دوران 5 کھرب روپے کے خوراک اور امدادی سامان میں خرد برد کا الزام عائد کیا تھا۔

اینٹی کرپشن کمیشن نے وزیر جولیاری باتوبارا سے خود کو تفتیش کے لیے پیش کرنے کی ہدایت کی تھی۔ اُن پر الزام ہے کہ خوراک اور امدادی سامان کا ٹھیکہ دینے کے لیے کمپنی سے 12 لاکھ ڈالر رشوت لی تھی۔

اس سے قبل وزیر میری ٹائم افیئرز اینڈ فیشریز کو بھی رشوت خوری پر گرفتار کیا گیا تھا جس کے بعد انہیں اپنی وزارت سے ہاتھ دھونا پڑے تھے۔

یہ بھی دیکھیں

ایران و چین معاہدے پر امریکہ چراغ پا

امریکی صدر نے ایران اور چین کے 25 سالہ معاہدے پر سخت تشویش کا اظہار …