اتوار , 18 اپریل 2021

لیبیا کے خلیفہ نے ترکی بحری جہاز کو روک کر اپنے قبضے میں لے لیا

خیلفہ حفتر نے ترکی کے بحری جہاز کو اپنے کنٹرول میں لے لیا ہے۔

خلیفہ حفتر کی ملیشیا نے تُرکی کے تجارتی جہاز پر اس وقت دھاوا بول دیا جب وہ لیبیا کی سمندری حدود میں داخل ہو رہا تھا۔

اس واقعے کے تعلق سے خلیفہ حفتر کے ترجمان میجر جنرل احمد مسماری نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ جمائیکا‎ کے پرچم تلے کارگو جہاز کو جبل الاخضر میں راس ہلال کے ساحل سے لیبیا کی حدود میں داخل ہونے پر روکا گیا۔

بتایا جاتا ہے کہ مبروکہ نامی یہ بحری جہاز مصراتہ بندرگاہ کی طرف جا رہا تھا اور اس پر ترکی کے 9 جبکہ ہندوستان اور آذربائیجان سے تعلق رکھنے والے 7 افراد سوار ہیں۔

حفتر ملیشیا کے ترجمان نے الزام عائد کیا کہ جہاز کو ممنوعہ فوجی علاقے کی طرف بڑھنے سے خبردار کیا، تاہم کپتان نے ہدایت پر عمل نہیں کیا۔ جس کے بعد اس بحری جہاز کو روک کر راس ہلال کی بندرگاہ تک پہنچا دیا گیا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ایران و چین معاہدے پر امریکہ چراغ پا

امریکی صدر نے ایران اور چین کے 25 سالہ معاہدے پر سخت تشویش کا اظہار …