اتوار , 18 اپریل 2021

گاڑی چلاتے ہوئے کون سی غلطیاں آپ کو ایک برا ڈرائيور ثابت کرتی ہیں

ایک مشہور کہاوت ہے کہ گاڑی چلانا تو سب ہی جانتے ہیں مگر گاڑی کو روکنا کسی کسی کو آتا ہے ۔ ہر گاڑی کو چلانے والا ڈرائیور تو کہلایا جا سکتا ہے مگر اس کے اندر کچھ خصوصیات کی غیر موجودگی اس کو ایک برا ڈرائیور ثابت کرتی ہے- ایسی ہی کچھ خصوصیات کے بارے میں ہم آپ کو بتائيں گے جن کے بارے میں جان کر آپ خود اس بات کا فیصلہ کریں کہ آپ اچھے ڈرائيور ہیں یا نہیں-

1: پارکنگ کا طریقہ
گاڑی کی پارکنگ کا طریقہ کسی کے بھی اچھے یا برے ہونے کے بارے میں بتا دیتا ہے- اگر کم جگہ پر مناسب انداز میں آپ پارکنگ کرنے میں دشواری محسوس کرتے ہیں اور آپ کو عام افراد کے مقابلے میں زیادہ وقت درکار ہوتا ہے تو اس کا مطلب ہے کہ ابھی آپ کو ڈرائيونگ پر عبور حاصل نہیں ہے اور اس کے لیے آپ کو مزيد محنت کی ضرورت ہے-

2: کلچ کا استعمال
ایک مشاق ڈرائیور اور گاڑی کی کلچ میں بے انتہا انڈر اسٹنڈنگ کا ہونا بہت ضروری ہے- اگر آپ کی گاڑی کا کلچ آپ کے اشاروں کو نہیں سمجھتا تو اس میں قصور وار گاڑی کا کلچ نہیں ہے بلکہ یہ اس بات کا ثبوت ہے کہ ابھی آپ کو مزيد مشق کی ضرورت ہے-

3: گاڑی کا روکنا اور بریک کا استعمال
گاڑی کو روکنے کے لیے بریک کی ضرورت ہوتی ہے مگر اس بریک کا استعمال آپ کس طرح کرتے ہیں اگر اس کے استعمال کے ساتھ آپ کی گاڑی ایک جھٹکے سے رک جاتی ہے تو یہ جھٹکا آپ کے اناڑی پن کی دلیل ہے- لہٰذا آپ کو ابھی مزيد پریکٹس کی ضرورت ہے تاکہ آپ گاڑی کو بغیر جھٹکے کے روک سکیں-

4: گئير کا استعمال
گاڑی کو چلانے کے لیے گئير کی بوقت ضرورت تبدیلی کو سیکھنا بہت ضروری ہے اناڑی ڈرائيور اس وقت سب سے زيادہ کنفیوز ہو جاتا ہے اور اس کو اس بات کا فیصلہ کرنے اور سمجھنے میں کافی وقت لگتا ہے کہ کس وقت گاڑی کو کس گئير میں چلانا ہے ۔ حالات کے مطابق تیزی سے گئير کو تبدیل کرنا اور اس دوران اسٹیئرنگ اور کلچ پر مکمل کنٹرول ہی ایک انسان کو مشاق ڈرائيور ثابت کرتا ہے-

5: بار بار گاڑی کا بند ہو جانا
گآڑی کو چلانے کے دوران کبھی گئير کی تبدیلی کے دوران یا کلچ کو دباتے ہوئے یا بریک لگنے سے گاڑي کا بند ہو جانا اس بات کا ثبوت ہے کہ ابھی ڈرائيور اپنے فن میں مہارت حاصل نہیں کر سکا ہے- یہ عمل ایک جانب تو فیول کے ضياع کا باعث بنتا ہے تو دوسری جانب اناڑی پن کا ثبوت بھی ہوتا ہے-

6: اسٹئیرنگ کو پکڑنے کا انداز
گاڑی کے اسٹئیرنگ وہیل تھامنے کے انداز سے ہی ثابت ہو جاتا ہے کہ ڈرائيور مشاق ہے یا اناڑی ، اسٹئیرنگ وہیل کو تین چوتھائی حصے کو تھام کر کنٹرول کیا جاتا ہے- اگر کوئی ڈرائيور گاڑی کے اسٹئرنگ وہیل کو اندر رم کی جانب سے تھامتا ہے تو اس سے ایک جانب تو کسی حادثے کی صورت میں اس کے ہاتھوں کو شدید خطرات لاحق ہو سکتے ہیں اور دوسری جانب اس سے اس کے ہاتھوں پر دباؤ بھی زيادہ پڑ سکتا ہے اور وہ جلد تھکن کا شکار ہو سکتا ہے-

7: ٹھنڈے انجن کے ساتھ تیز ڈرائيونگ
گاڑی کا انجن ایک مشین ہے جس کو اسٹارٹ ہونے کے بعد کچھ وقت گرم ہونے کے لیے درکار ہوتا ہے جس کے بارے میں مشاق ڈرائيور تو انجن کی آواز سن کر سمجھ سکتے ہیں جب کہ اناڑی ڈرائيور کی ایک نشانی یہ بھی ہوتی ہے کہ وہ ٹھنڈے انجن کو ہی ریس دے کر تیز گاڑی چلانے کی کوشش کرتا ہے جو کہ گاڑي کے انجن کے لیے کافی نقصان دہ ثابت ہو سکتا ہے-

یہ بھی دیکھیں

یوسف رضا گیلانی سینیٹ میں اپوزیشن لیڈر مقرر

پاکستانی میڈیا رپورٹوں کے مطابق سینیٹ سیکریٹریٹ نے پیپلز پارٹی کے سینیٹر یوسف رضا گیلانی …