منگل , 13 اپریل 2021

شہید قاسم سلیمانی سے جس واحد فریق کو فائدہ ہوا، وہ داعش تھا: ظریف

وزیر خارجہ ظریف نے کہا ہے کہ آئي آر جی سی کی قدس فورس کے کمانڈر شہید جنرل قاسم سلیمانی کی شہادت سے جس واحد فریق کو فائدہ پہنچا، وہ داعش کے دہشت گرد تھے۔

محمد جواد ظریف نے جنرل قاسم سلیمانی کی شہادت کی پہلی برسی کے موقع پر اپنے ایک ٹویٹ میں کہا کہ گزشتہ سال شدت پسند دہشت گردوں کے سب سے بڑے دشمن کو، سب سے بڑے دہشت گرد نے بزدلی کے ساتھ قتل کر دیا۔ انھوں نے مزید لکھا ہے کہ ایسے عالم میں جب پورا خطہ ان کی پہلی برسی کو پورے شکوہ و وقار کے ساتھ منا رہا ہے، ان کے قتل سے صرف داعش کو فائدہ پہنچا ہے جس نے اس وقت سے اپنی سرگرمیاں بڑھا دی ہیں۔

یاد رہے کہ گزشتہ برس تین جنوری کو امریکی دہشتگرد فوج نے ڈونلڈ ٹرمپ کے براہ راست حکم پر ایران کی سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کی قدس فورس کے کمانڈر، جنرل قاسم سلیمانی اور عراق کی عوامی رضاکار فورس الحشد الشعبی کے ڈپٹی کمانڈر جنرل ابو مہدی المہندس کو ان کے ساتھیوں کے ہمراہ ڈرون حملہ کر کے شہید کر دیا تھا۔ امریکہ کے اس مجرمانہ اقدام کے بعد عراقی پارلیمنٹ میں ملک سے تمام امریکی فوجیوں کے انخلا کا قانون منظور کیا جا چکا ہے۔

 

یہ بھی دیکھیں

ایران و چین معاہدے پر امریکہ چراغ پا

امریکی صدر نے ایران اور چین کے 25 سالہ معاہدے پر سخت تشویش کا اظہار …