منگل , 15 جون 2021

یورپ کا غیرملکی تارکین وطن کے سلسلہ میں غیر ذمہ دارانہ رویہ

مغربی یورپ پہنچنے والے تارکین وطن نے الزام لگایا ہے کہ یورپی سرحدی فورس "فرونٹیکس” انہیں واپس دھکیلنے میں مصروف ہے۔ تارکین وطن کا کہنا ہے کہ یورپی سرحدی پولیس بالکان علاقے میں غیر ملکی تارکین وطن کو بچانے یا پناہ دینے کے بجائے انہیں واپس بھیج کر ان کی زندگيوں کو خطرات میں ڈال رہی ہے۔

امدادی پروگرام کی انتظامی امور کی نگراں ہوپ بیکر نے یورپی سرحدی پولیس کے اس عمل کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ایسا ممکن ہے کہ فرونٹیکس مہاجرین کو واپس بھیجنے میں ملوث ہو، کیوں کہ ایسا صرف سرحدوں میں نہیں بلکہ اندرون ملک بھی ہوا ہے اور اس کی وجہ سے مغربی یورپ پہنچنے والے مہاجرین یونانی سیکورٹی اہل کاروں اور دوسرے حکام کے ساتھ رابطہ قائم کرنے سے گریز کرتے ہیں۔

کئی دوسری امدادی تنظیموں کا بھی کہنا ہے کہ شمالی مقدونیا اور البانیا کی سرحدوں پر تارکین وطن کو واپس دھکیلنے کے کئی واقعات رپورٹ ہو چکے ہیں۔ ہوپ بیکر کے مطابق مجموعی صورت حال بہت پیچیدہ اور مبہم ہے، تاہم اس میں کوئی شک نہیں کہ البانوی سرحدوں پر فرونٹیکس غیر معمولی طور پر سرگرم ہے۔

 

یہ بھی دیکھیں

عراق، روضہ کاظمین کے قریب دھماکہ، تین افراد جاں بحق

بغداد: عراق کے دارالحکومت بغداد کے نواحی علاقے کاظمین میں ہونے والے دھماکے میں کم …