منگل , 13 اپریل 2021

یورپی ٹرائیکا کو ایرانی وزیرخارجہ کا منہ توڑ جواب

ایران کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ یورپی ٹرائیکا نے ایٹمی معاہدے کو بچانے کے لیے اپنی ذمہ داریوں پر عمل نہیں کیا ہے۔

برطانیہ، فرانس اور جرمنی کی جانب سے جاری کیے جانے والے مشترکہ بیان پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے اپنے ایک ٹوئٹ میں کہا ہے کہ مذکورہ ممالک نے ایٹمی معاہدے کو بچانے کے لیے کچھ بھی نہیں کیا۔ انہوں نے لکھا ہے یہ ممالک ایٹمی معاہدے کے تحت اپنے وعدوں پر عملدرآمد کے لیے بھی امریکہ سے اجازت لینے کے محتاج ہیں۔

ایران کے وزیر خارجہ نے واضح کیا کہ ایٹمی معاہدہ یورپی ٹرائیکا کی وجہ سے نہیں بلکہ ایران کی وجہ سے اب تک باقی ہے۔ انہوں نے فرانسیسی وزیر خارجہ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا مسٹر لودریان، تم نے تو فرانسیسی کابینہ میں اپنے کام کا آغاز ہی سعودی جنگی مجرموں کو اسلحے کی فروخت کے ذریعے کیا تھا، بہتر ہوگا کہ ایران کے بارے میں اپنی بکواس بند کرو! تم مغربی ایشیا میں بدامنی کے ذمہ دار ہو۔

قابل ذکرہے کہ فرانسیسی وزیر خارجہ جان ایوے لودریان نے اپنے مداخلت پسندانہ اور بے شرمانہ بیان میں کہا ہے کہ صرف ایٹمی معاہدے کو دوبارہ زندہ کرنا کافی نہیں بلکہ ایران کی علاقائی سرگرمیوں اور میزائل پروگرام کے بارے میں مذکرات ہونا چاہیں۔

 

یہ بھی دیکھیں

ایران و چین معاہدے پر امریکہ چراغ پا

امریکی صدر نے ایران اور چین کے 25 سالہ معاہدے پر سخت تشویش کا اظہار …