پیر , 12 اپریل 2021

دنیا کے اہم ترین سمندری راستے نہر سوئز میں پھنسے بحری جہاز کو نکال لیا گیا

قاہرہ: دنیا کے اہم ترین سمندری راستے کی بندش سے متعلق بڑی خبر آ گئی، کوششیں رنگ لے آئیں اور سوئز کینال میں پھنسے تائیوان کے بحری جہاز کو نکال لیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق نہر سوئز میں پھنسے ایور گرین نامی بحری جہاز کو نکالنے کا آپریشن کامیابی سے ہم کنار ہو گیا ہے، بحری جہاز نکال لیا گیا، سوئز کینال میں بحری جہاز پھنسنے سے اربوں ڈالر کا نقصان ہوا ہے۔

رپورٹس کے مطابق دنیا کی اہم تجارتی گزرگاہ بند ہونے سے یومیہ 9 ارب ڈالر مالیت کی تجارت متاثر ہوئی، تجارتی نقل و حمل کے نقصان کا تخمینہ 400 ملین ڈالر فی گھنٹہ لگایا گیا ہے۔

سوئز کینال کی بندش سے دونوں طرف 300 سے زائد جہاز پھنس گئے تھے، یہاں سے یومیہ 18 لاکھ بیرل تیل کی ترسیل کی جاتی ہے۔

عالمی بحری تجارت کا 12 فی صد حصہ سوئز نہر سے گزرتا ہے، سوئز کینال 193 کلو میٹر طویل، اور اس کی چوڑائی 205 میٹر ہے، کینال بند ہونے سے تیل کی ترسیل اورگاڑیوں کی فراہمی زیادہ متاثر ہوئی۔

ایور گرین نامی مال بردار بحری جہاز تائیوان سے تعلق رکھنے والی کمپنی ایور گرین کی ملکیت ہے، کارگو جہاز کی لمبائی فٹ بال کے 4 میدانوں کے برابر ہے اور اس کا شمار دنیا کے سب سے بڑے کنٹینر بردار جہازوں میں ہوتا ہے، 2 لاکھ ٹن وزنی اس مال بردار جہاز پر 20 ہزار کنٹینر لادے جا سکتے ہیں۔

یہ دیو ہیکل بحری جہاز منگل 23 مارچ کو نہر سوئز میں واقع بندرگاہ کے شمال میں پھنسا تھا، جہاز ایور گرین چین سے نیدرلینڈز کے شہر راٹرڈیم جا رہا تھا۔ بحیرہ روم کی جانب گامزن جہاز مقامی وقت کے مطابق صبح 7.40 پر تکنیکی خرابی کے باعث توازن اور سمت برقرار نہ رکھ سکا اور نہر میں آڑھا ترچھا پھنس گیا۔ کمپنی کا کہنا تھا کہ جہاز ہوا کے تیز جھکڑ کی وجہ سے پھنس۔

یہ بھی دیکھیں

ایران و چین معاہدے پر امریکہ چراغ پا

امریکی صدر نے ایران اور چین کے 25 سالہ معاہدے پر سخت تشویش کا اظہار …