جمعرات , 14 نومبر 2019

صہیونی فوج نے اردن کی سرحد پر دیوار کی تعمیر شروع کردی

27

اسرائیلی محکمہ دفاع نے انکشاف کیا ہے کہ فوج نے رواں ہفتے اردن کی سرحد سے متصل علاقے میں حفاظتی دیوار کی تعمیر شروع کی ہے۔ اس دیوار کا مقصد اسرائیل کو سرحد پار سے درپیش خطرات کا تدارک اور یہودی کالونیوں کو تحفظ فراہم کرنا ہے۔
رپورٹ کے مطابق اسرائیلی وزارت دفاع کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ محکمہ دفاع کے شعبہ انجینیرنگ اور تعمیرات نے اردن۔ اسرائیل سرحد پر حفاظتی دیوار کے پہلے مرحلے پر کام شروع کردیا ہے۔
بیان میں کہا گیا ہے کہ اردن کی سرحد پر زیرتکمیل حفاظتی دیوار اسرائیل کی مصر اور شام کی وادی گولان میں بنائی گئی حفاظتی دیوار ہی کی طرح ہے۔ دیوار میں جگہ جگہ پر کنٹرول ٹاور کے قیام کے ساتھ ساتھ جدید ترین مواصلاتی آلات بھی نصب کیے جائیں گے تاکہ سرحد پار سے ہونے ولی دراندازی کی روک تھام میں مدد لی جاسکے اور کسی بھی نقل وحرکت کا برقت پتا چلا کر مشتبہ افراد کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے۔
اردن اور اسرائیل کے درمیان سرحد پرحفاظتی دیوار 30 کلو میٹر کےعلاقے پر بنائی جائے گی۔ یہ دیوار مقبوضہ فلسطین کی وادی عربہ سے اردن کی ایلات سیرگاہ تک ہوگی جس کی تعمیر پر 75 ملین ڈالر کے اخراجات کا تخمینہ لگایا گیا ہے۔ توقع ہے کہ یہ منصوبہ رواں سال کے اختتام تک پایہ تکمیل کو پہنچ جائے گا۔
اسرائیلی محکمہ دفاع کے ترجمان ارئیل ھفیران کا کہنا ہے کہ اردن کی سرحد پر دیوار کی تعمیر کا مقصد اسرائیلی شہریوں کو سرحد پار سے درپیش خطرات سے تحفظ فراہم کرنا ہے۔
رپورٹ میں بتایا ہے کہ سرحد پر اسرائیل کی جانب سے حفاظتی دیوار کے منصوبے پرعمان حکومت نے لاپرواہی کا مظاہرہ کیا ہے۔ اردنی حکومت کی جانب سے کہا گیا ہے کہ سرحد سے متصل علاقے میں حفاظتی دیوار اسرائیل کا اندرونی معاملہ ہے اردن کو اس میں مداخلت کا کوئی جواز نہیں ہے۔

یہ بھی دیکھیں

جہاد اسلامی کے کمانڈر کی شہادت پر فلسطینی گروہوں کا ردعمل

یروشلم: فلسطین کی جہاد اسلامی تحریک کے سینئر کمانڈر کے قتل کے بعد مختلف فلسطینی …