جمعرات , 25 فروری 2021

شامی فوج کی کارروائی میں دہشت گرد گروہ جیش الاسلام کا سرغنہ زہران علوش ہلاک

شامی فوج کی بھرپور کارروائی میں آل سعود سے وابستہ دہشت گرد گروہ جیش الاسلام کا سرغنہ زہران علوش اپنے درجنوں ساتھیوں سمیت ہلاک ہوگیا ہے۔
دمشق میں عسکری ذرائع نے بتایا ہے کہ سعودی عرب سے وابستہ دہشت گرد گروہ جیش الاسلام کا سرغنہ زہران علوش اس گروہ کے بیس دیگر سرغنوں کے ساتھ جمعے کی شام جنوبی شام کے علاقے مشرقی غوطہ میں ایک فضائی بمباری میں اس وقت ہلاک ہوگیا جب وہ احرار الشام نامی دہشت گرد گروہ کے سرغنہ فیلق الرحمان کے ساتھ ، ملکر شامی فوج اور حزب اللہ کے خلاف کارروائی کی منصوبہ بندی کر رہا تھا۔
دہشت گرد گروہ جیش الاسلام کو سعودی عرب کے سابق انٹیلی جنس چیف بندر بن سلطان نے قائم کیا تھا اور آل سعود کی جانب سے اس دہشت گردگروہ کی مسلسل حمایت کی جارہی ہے۔ زہران علوش حال ہی سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں ہونے والے شام مخالفین کے اجلاس میں بھی پیش پیش تھا۔شامی فوج کے جاری کردہ بیان میں زہران علوش سمیت سرکردہ دہشت گردوں کی ہلاکت کی کارروائی کو دہشت گردی کے خلاف قومی مشن کا حصہ قرار دیا دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ آخری دہشت گرد کی ہلاکت تک دہشت گردوں کے خلاف آپریشن جاری رہے گا۔ شامی فوج کے ترجمان علی میہوب نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ فضائیہ نے یہ کارروائی عوام کے تعاون اور انٹیلی جنس ذرائع سے حاصل ہونے والی معلومات کی بنیاد پر انجام دی اور دہشت گردوں کے خفیہ ٹھکانے کا پتہ لگانے کے بعد اسے تباہ کردیا گیا۔زہران علوش کی ہلاکت کے بعد دہشت گردوں میں سراسیمگی پھیل گئی ہے اور مشرقی غوطہ میں واقع جیش الاسلام کے گڑھ دوما میں موجود دہشت گرد وہاں سے فرار ہونے لگے ہیں۔ایک اطلاع کے مطابق سعودی عرب نے ایک بار پھر خوفزدہ اور بکھرے ہوئے دہشت گردوں کو جمع کرنے کے لیے کوشش شروع کردی ہے۔ کہا جارہا ہے کہ زہران علوش کی ہلاکت کے بعد عصام بویضانی عرف ابوھمام کو جیش الاسلام کا نیا سرغنہ مقرر کیاگیا ہے۔دوسری جانب شامی فوج نے مغربی حلب کے علاقے میں کارروائیوں کے دوران دہشت گردوں کے ھاون میزائل کے چھے لانچنگ پیڈ بمباری کر کے تباہ کردیئے ہیں۔ ان حملوں میں کم سے کم بارہ دہشت گردوں کے مارے جانے کی خبر ہے۔ شامی فوج نے عوامی رضاکاروں کی مدد سے شمالی حلب کے نواحی علاقے باشکوئی کو بھی دہشت گردوں کے قبضے سے آزاد کرالیا ہے۔ شامی فوج نے شام کے جنوب مغربی علاقے القلمون کی گھاٹیوں میں واقع زمرانی پاس کے اطراف میں دہشت گرد گروہ داعش کے ٹھکانوں پر بمباری کی ہے جس کے نتیجے میں متعدد دہشت گرد ہلاک ہوگئے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

شہید قاسم سلیمانی کے قتل کا جواب امریکہ کو دینا ہو گا: ایران

مجید تخت روانچی نے ایران اور امریکہ کے مابین قیدیوں کے تبادلے کے سوال پر …