منگل , 21 مئی 2019

امریکہ کو ثبوت فراہم کر دیے، گولن کو ترکی کے حوالے کرنا ہی ہوگا: اردگان

578c9b4885b77

انقرہ(مانٹیرنگ ڈیسک ) ترک صدر رجب طیب اردوان نے کہا ہے کہ امریکا کو فتح اللہ گولن کیخلاف دستاویز ی ثبوت فراہم کردئیے ہیں، امریکا کو انہیں ترکی کے حوالے کرنا ہی پڑے گا ، وزیر اعظم بن علی یلدرم نے کہا کہ فتح اللہ گولن کو ہر صورت ترک عدالتوں کے سامنے اپنے کیے کا حساب دینا ہو گا۔ ترکی اور روس نے عراق اور شام میں کرد باغیو ں اور داعش کیخلاف مشترکہ کارروائی پر اتفاق کیا ہے ، ترک حکومت نے ملک بھر کے تعلیمی اداروں سے 27 ہزار سے زائد ملازمین کو برطرف کر دیا ۔ ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف آج ترکی پہنچیں گے ۔ امریکی میڈیا نے ترکی کی سرکاری نیوز ایجنسی اناطولیہ سے منسوب اردوان کا ایک بیان جاری کیا ہے ، جس میں اردوان نے امریکا سے کہا ہے کہ جلد یا بدیر اسے متنازع اسلامی ا سکالر فتح اللہ گولن کو ترکی کے حوالے کرنا ہو گا۔ اردوان نے کہا کہ گولن کیخلاف 85 صندوقوں پر مشتمل دستاویزی ثبوت ترک پارلیمانی وفد نے امریکی حکام کے حوالے کردئیے ہیں ، جس کے بعد انکی ترکی کو حوالگی سے انکارکی کوئی وجہ باقی نہیںرہے گی۔رجب طیب اردوان نے کہا کہ امریکا کو ترکی اور گولن میں سے کسی ایک کا انتخاب کرنا ہوگا۔ دریں اثنا صدر رجب طیب اردوان نے روس کیساتھ تعلقات کو اعلیٰ سطح پر پہنچانے کی تمنا کا اظہار کیا ہے۔انہوں نے روس کے دورے سے واپسی پر طیارے میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ صدر پیوٹن نے ماسکو میں کھولے جانیوالے مختلف ترک مخالف تنظیموں کے دفاتر کی جانچ پڑتال کا وعدہ کیا ہے ۔ دریں اثنا روس اور ترکی نے عراق اور شام میں کرد باغیوں اور داعش کیخلاف مشترکہ کارروائیوں پر اتفاق کیا ہے ۔ ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف آج ترکی پہنچیں گے ، جہاں انکی اپنے ترک ہم منصب اور صدر اردوان سے ملاقاتیں ہونگی ۔ ترک حکومت نے ناکام فوجی بغاوت کے بعد جاری کریک ڈائون کے سلسلے میں ملک بھر کے تعلیمی اداروں سے 27 ہزار سے زائد ملازمین کو برطرف کر کے انکی ملازمت کے اجازت نامے بھی منسوخ کردئیے ، اب انہیں کسی بھی سرکاری یا نجی تعلیمی ادارے میں نوکری نہیں ملے گی۔ ترک حکام اب تک عدلیہ، سیکیورٹی فورسز اور تعلیم کے شعبے سے وابستہ 60 ہزار کے قریب افراد کو معطل ، گرفتار یا برطرف کر چکے ہیں۔یورپی ملک بلغاریہ نے سیاسی پناہ کے طالب فتح اللہ گولن کے حامی ترک بزنس مین عبد اللہ بویوک کو ڈی پورٹ کردیا، جس کے بعد بلغارین حکام پر شدید تنقید کی جا رہی ہے کہ انہوں نے ترک دبائو میں آکر بغیر کسی قانونی کارروائی اسے ڈی پورٹ کر دیا۔

یہ بھی دیکھیں

تاجکستان : قیدیوں کے درمیان خونریز تصادم، 32 افراد ہلاک

دوشنبے(مانیٹرنگ ڈیسک)تاجکستان کے دارالحکومت دوشنبے کی جیل میں قیدیوں کے درمیان فسادات کے نتیجے میں …