اتوار , 28 فروری 2021

افغانستان میں امن، مصالحت کے لیے سازگار ماحول کی ضرورت

پاکستانی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے ایک بیان کے مطابق پاکستانی فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف نے امریکی خفیہ ایجنسی سی آئی اے کے سربراہ جان برینن سے پیر کو ملاقات کی ہے
اس ملاقات کے دوران انھوں نے علاقے کو درپیش مسائل اور ان سے نمٹنے کے طریقوں پر تبادلہ خیال کیا۔جنرل راحیل شریف نے ورجینیا میں لینگلے کے مقام پر سی آئی اے کے ہیڈ کوراٹرز میں امریکی ایجنسی کے سربراہ سے ملاقات کی۔آئی ایس پی آر کے ڈائریکٹر جنرل لیفٹیننٹ جنرل عاصم سلیم باجوہ نے اپنے ٹویٹس میں کہا کہ اس ملاقات کے دوران چیف آف آرمی سٹاف نے بطور خاص خطے میں مستقل استحکام کی ضرورت پر زور دیا۔سلیم باجوہ کے مطابق جنرل راحیل شریف نے خطے میں افغان حکومت کی سربراہی میں افغانستان میں امن اور مصالحت کے لیے سازگار ماحول کی ضرورت پر زور دیا۔ باجوہ کے مطابق سی آئی اے کے چیف نے جنرل راحیل سے خطے کے مستقبل اور دیر پا علاقائی امن کے مواقع پر بات کی اور افغان مصالحت کے لیے پاکستان کی کوششوں کو سراہا۔برینن نے ضرب عضب کی کامیابیوں اور سکیورٹی پر اس کے مثبت اثرات کا اعتراف کیا۔خیال رہے کہ چیف آف آرمی سٹاف ان دنوں امریکہ کے پانچ روزہ دورے پر ہیں۔ تجزیہ نگاروں کے مطابق اس دورے میں وہ خطے میں اسلام آباد اور واشنگٹن کو درپیش سکیورٹی مسائل اور سیویلین ملیٹری تعلقات کی جہات پر بات کریں گے۔یہ دورہ وزیر اعظم نواز شریف کی امریکی صدر براک اوباما سے اوول آفس میں ملاقات کے بعد ہو رہی ہے اور ان میں سکیورٹی سے متعلق بہت سی باتیں مشترک ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

پاکستان میں داعش کے وجود کے پیچھے بھی امریکہ ہے , علامہ محمد امین شہیدی

گڑھ مہاراجہ: ابلاغ نیوز کی رپورٹ کے مطابق اُمتِ واحدہ پاکستان کے سربراہ علامہ محمد …