جمعرات , 4 مارچ 2021

ہر صورت سمیر القنطار کی شہادت کا انتقام لیا جائیگا، سید حسن نصراللہ

حزب اللہ لبنان کے سیکرٹری جنرل سید حسن نصراللہ نے کہا ہے کہ حزب اللہ کے سینیئر کمانڈر سمیر القنطار استقامت کی راہ اور فلسطینی امنگوں کی حمایت میں شہید ہوئے ہیں۔ لبنان کے المنار ٹیلی ویژن چینل نے خبر دی ہے کہ سید حسن نصراللہ نے حزب اللہ کے سینیئر کمانڈر شہید سمیر القنطار کی مجلس ہفتم میں خطاب کرتے ہوئے ان سب لوگوں کا شکریہ ادا کیا، جنہوں سمیر القنطار کی شہادت پر تعزیت پیش کی اور ہمدردی کا اظہار کیا ہے۔ حزب اللہ کے سربراہ نے کہا کہ سمیر القنطار نے فلسطینی کاز کی حمایت میں پورے احساس ذمہ داری اور سنجیدگی کے ساتھ جہاد کیا اور درجہ شہادت پر فائز ہوئے۔ انہوں نے ثابت قدمی، عزم و حوصلے اور ایثار و فداکاری کو شہید سمیر القنطار کی اہم ترین خصوصیات قرار دیا اور ان کے اہل خانہ کو ایک بار پھر تعزیت پیش کرتے ہوئے پیغمبر اسلام حضرت محمد مصطفے صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اور حضرت عیسی علیہ السلام کے ایام ولادت باسعادت کی مبارکباد پیش کی۔سید حسن نصراللہ نے تیس سالہ قید کے دوران سمیر القنطار کی استقامت و پامردی کو اس شہید کی بے انتہا جانفشانی اور فداکاری کا منہ بولتا ثبوت قرار دیا اور کہا کہ سمیر القنطار نے ایک ایسے وقت مزاحمتی کارروائیوں کو انجام دینے کی ذمہ داری سنبھالی، جب انہیں اس کے انجام یعنی شہادت اور اسیری کا پورا علم تھا۔ حزب اللہ کے سربراہ نے علاقے میں گذشتہ کئی سال سے جاری بحرانوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ یہ بحران تباہ کن جنگوں کے بعد اور صیہونی حکومت کے مفادات کو پورا کرنے کے لئے علاقے کے عوام پر مسلط کئے گئے ہیں۔ سید حسن نصراللہ نے مسلم نوجوانوں کو عالم اسلام کے مرکزی مسائل سے دور کرنے کے لئے دشمنوں کی ثقافتی یلغار اور غیر اخلاقی منصوبوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اس قسم کی سازشوں کا سمیر القنطار جیسے اسلام کے سپوتوں پر کوئی اثر نہیں ہوا ہے۔ واضح رہے کہ ایک ہفتے قبل صیہونی حکومت کے جنگی طیاروں نے دمشق کے مضافات میں ایک رہائشی عمارت پر حملہ کرکے حزب اللہ کے سینیئر کمانڈر سمیر القنطار کو شہید کر دیا تھا۔

یہ بھی دیکھیں

شام پر حملہ کرنے والے اسرائیلی میزائل تباہ

شامی فوج نے صوبہ حماہ کی فضا میں اسرائیل کے میزائلی حملوں کو ناکام بنا …