پیر , 8 مارچ 2021

کراچی: ‘غیرت’ کے نام پر 2 افراد کا قتل

Target-killer-arrested-in-Karachi

صوبہ سندھ کے دارالحکومت کراچی میں خاتون سمیت دو افراد کو غیرت کے نام پر قتل کردیا گیا۔

ایس ایچ او گلشن معمار کے مطابق واقعہ گلستانِ رابعہ میں پیش آیا جہاں 30 سالہ خاتون بھگی اہلیہ نذیر بگٹی اور 40 سالہ مسعود خان کو غیرت کے نام پر قتل کردیا گیا۔

ایس ایچ او کا کہنا تھا کہ دونوں افراد کو خاتون کے بہنوئیوں نے قتل کیا، جبکہ جائے وقوع سے نائن ایم ایم پستول کے تین خول بھی ملے۔

انہوں نے کہا کہ پولیس نے ملزمان کی گرفتاری کے لیے کارروائیوں کا آغاز کردیا ہے۔

خیال رہے کہ پاکستان میں ہر سال عزت کے نام پر ایک ہزار سے زائد خواتین کو نشانہ بنایا جاتا ہے اور ایسا اکثر خاندان کے افراد کی جانب سے ہوتا ہے۔

اگرچہ گزشتہ ایوان بالا (سینیٹ) میں غیرت کے نام پر قتل کا ترمیمی بل منظور ہوچکا ہے، تاہم قانون پر عملدرآمد نہ ہونے کی وجہ سے ملک کے مختلف حصوں بالخصوص اندرونی علاقوں میں ایسے واقعات تواتر سے پیش آتے رہتے ہیں اور کئی برادریوں میں اسے صحیح مانا جاتا ہے۔

غیرت کے نام پر خواتین کے قتل کے واقعات عموماً پسند کی شادی کرنے، غیر مرد کے ساتھ تعلقات قائم کرنے اور خاندان و برادری کی فرسودہ روایات کے خلاف آواز اٹھانے کے باعث پیش آتے ہیں۔

تقریباً 3 ہفتے قبل وزیر اعظم نواز شریف نے بھی ملک سے غیرت کے نام پر قتل کے خاتمے کے عزم کا اظہار کیا۔

وزیر اعظم ہاؤس سے جاری بیان میں ان کا کہنا تھا کہ غیرت کے نام پر قتل جیسی لعنت نے پاکستانی معاشرے کے بہت سے حصوں کو متاثر کیا ہے۔

انہوں نے اس برائی کے خاتمے کے لیے مناسب قانون سازی کرنے کے عزم کا بھی اظہار کیا۔

یہ بھی دیکھیں

فلسطین کی آزادی اور اسرائیل کا خاتمہ، پاکستانی قوم کی خواہش

حماس کے رہنما اسمٰعیل ہنیہ نے کہا ہے کہ پاکستان نے ہمیشہ فلسطین کی حمایت …