جمعرات , 18 جولائی 2019

طاقتور ملک دہشت گردوں کا استعمال کرتے ہیں، حسن روحانی

2016-04-17-13-45-4220026_generic

تہران (مانیٹرنگ ڈیسک)ایرانی صدر حسن روحانی نے صوبے مرکزئی میں میڈیا سے گفتگو میں کہا ہے کہ بغیر اجازت کسی بھی ملک میں مداخلت خطرناک ہے۔ عراق اور شام کی جانب سے درخواست کے بغیر اگر کوئی ملک فوج بھیج کر قبضہ جما لے تو اس سے خطرناک صورت حال پیدا ہو جائے گی۔
ترکی کی جانب سے عراقی شہر موصل کے قریب بنائی گئی فوجی چھاؤنی کی وجہ سے دونوں ممالک میں شدید تنازع ہے۔ اب ایرانی صدر نے بھی نام لئے بغیر اس عمل کی مذمت کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ عالمی قوانین کی کھلی خلاف ورزی ہے
صدر روحانی نے کہا کہ عالمی طاقتوں کو اندازہ ہی نہیں کہ اس کی وجہ سے کیسے مسائل پیدا ہو سکتے ہیں۔ وسطیٰ ایشیا میں دہشت گردی طاعون کی طرح پھیل گئی ہے اور اس کو ختم کرنے کے لئے مغربی ممالک درست اقدامات نہیں کر رہے ۔
ایرانی صدر کے مطابق کچھ طاقتور ممالک دہشت گردوں کو پشت پناہی کر رہے ہیں تاکہ اپنے مقاصد حاصل کیے جائیں۔ برائی کی حمایت سے اچھے نتائج کبھی نہیں نکلتے۔ انہوں نے خطے کے تمام ممالک سے ایک دوسرے کی سرحدوں کے احترام کی اپیل کی ہے۔
ترکی کی اس فوجی چھاونی کی عراق اور شام نے شدید مذمت کی ہے۔ امریکی وزیر دفاع نے عراق کو قائل کرنے کی کوشش کی کہ وہ فی الحال مسئلے کو چھوڑ دے اور موصل پر قبضے کے بعد ترک چھاونی ختم کرانے پر غور کریں لیکن عراق اس کو تسلیم کرنےکے لئے تیار نہیں۔

یہ بھی دیکھیں

بحرین اور قطر پھر آمنے سامنے

رپورٹ کے مطابق بحرین کے وزیر خارجہ خالد بن احمد آل خلیفہ نے قطر کو …