جمعرات , 4 مارچ 2021

تھر میں ہلاکتیں: تحقیقات کیلئے جوڈیشل کمیشن قائم

Thar

وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے تھر میں غذائی قلت اور دیگر وجوہات کے باعث بچوں کی ہلاکتوں کی تحقیقات اور معاملے کا جائزہ لینے کے لیے جوڈیشل کمیشن قائم کردیا۔

جسٹس (ر) غلام سرور کورائی کی سربراہی میں قائم دو رکنی کمیشن 15 دن میں تحقیقات مکمل کرکے اپنی رپورٹ پیش کرے گا، ریٹائرڈ ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج ارجن رام کمیشن کے دوسرے رکن ہوں گے۔

کمیشن تھر میں بچوں کی ہلاکت کے اسباب اور حکومتی اقدامات کا جائزہ لے گا اور صورتحال بہتر بنانے کے لیے اپنی تجاویز بھی پیش کرے گا، کمیشن حکومتی اقدامات میں کوتاہی اور غلطیوں کی نشاندہی بھی کرے گا۔
دو رکنی جوڈیشل کمیشن آج سے اپنے کام کا آغاز کرے گا۔

تازہ رپورٹس کے مطابق تھر میں غذائی قلت اور پیدائشی بیماریوں کے باعث رواں سال ہلاک ہونے والے بچوں کی تعداد 173 تک جاپہنچی ہے۔

میڈیا رپورٹس کو نوٹس لیتے ہوئے وزیر اعلیٰ سندھ کا کہنا تھا کہ صوبائی حکومت نے تھر میں غربت کے خاتمے کے لیے عملی اقدامات اٹھائے ہیں۔

انہوں نے چیف سیکریٹری سندھ صدیق میمن کو معاملے کی تحقیقات کے لیے جوڈیشل کمیشن کے قیام کی بھی ہدایت کی تھی۔

یہ بھی دیکھیں

فلسطین کی آزادی اور اسرائیل کا خاتمہ، پاکستانی قوم کی خواہش

حماس کے رہنما اسمٰعیل ہنیہ نے کہا ہے کہ پاکستان نے ہمیشہ فلسطین کی حمایت …