ہفتہ , 6 مارچ 2021

یوکرین میں عین دکانوں کے سامنے لوگوں سے غذائی اشیاء چھینی جا رہی ہیں

1838875

یوکرین کے شہروں کو غیر عمومی جرم کی لہر نے اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے۔ مجرم سپر مارکیٹوں کے عین سامنے لوگوں کے ہاتھوں سے غذائی اشیاء سے بھرے پیکٹ چھیننے لگے ہیں، ماہرین سیاسیات اس کی توجیہہ ملک میں خراب تر ہوتے ہوئے معاشی حالات بتاتے ہیں۔

"لوگ دکانوں کے باہر تاک لگائے گھومتے رہتے ہیں اور غذا چھین لیتے ہیں۔ اس لوٹ کا شکار کوئی بھی ایسا شخص ہو سکتا ہے جس کے ہاتھ میں غذائی اشیاء سے بھرے پیکٹ ہوں۔ یوکرین میں لوگ وہ جسے کہتے ہیں روٹی کے ٹکڑے کی خاطر جرم کرنے پر تل چکے ہیں۔ کامیاب شریف لوگ غذائی اشیاء کی دکانوں سے چوری کرتے ہیں، گلی میں بیٹھ کر بیچنے والوں سے کھانے پینے کی چیزیں چھین لیتے ہیں۔ خریدنے والوں کا پیچھا کرتے ہیں اور موقع ملتے ہی ہتھیا لیتے ہیں”

کیف میں مجرم سپر مارکیٹوں کے خریداروں کو نشانہ بناتے ہیں۔ اکیلے اور گروہ کی شکل میں حملہ آور ہوتے ہیں۔

اس وقت یوکرین دیوالیہ ہونے کی دہلیز پر ہے۔ ملک میں بیروزگاری بڑھ رہی ہے، کرنسی کی قدر تین گنا سے زیادہ کم ہو چکی ہے۔ یوکرین کی وزارت برائے مالیات کے مطابق ملک میں اوسط آمدنی 160 ڈالر سے زیادہ نہیں جو یورپ کا کم ترین اعشاریہ ہے۔

یوکرین کے سابق صدر وکتور یوشینکو پہلے کہہ چکے ہیں کہ یوکرین 24 سال کے عمیق ترین بحران کی جانب بڑھ رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ معیشت میں گراوٹ کا تعلق ملک کے جنوب مشرق میں تصادم کے ساتھ ہے۔

یہ بھی دیکھیں

شام پر حملہ کرنے والے اسرائیلی میزائل تباہ

شامی فوج نے صوبہ حماہ کی فضا میں اسرائیل کے میزائلی حملوں کو ناکام بنا …