اتوار , 17 نومبر 2019

اردن: قلعے پر حملہ، کینیڈین شہری سمیت پانچ ہلاک

عمان (مانیٹرنگ ڈیسک)تاحال واضح نہیں ہے ابھی بھی کتنے سیاح صلیبی جنگوں کے دور میں تعمیر کردہ اس قلعے کے اندر موجود ہیںاردن میں حکام کے مطابق کرک شہر میں اور اس کے نواح میں مسلح افراد کے حملوں میں ایک کینیڈین سیاح اور چار پولیس اہلکار ہلاک ہوگئے ہیں۔نامعلوم مسلح افراد نے دو پیٹرولنگ پولیس اہلکاروں پر فائرنگ کی اور اس کے بعد ایک قدیم قلعے میں ایک پولیس سٹیشن کو نشانہ بنایا۔
اطلاعات کے مطابق کئی سیاح اندر پھنسے ہوئے تھے جنھیں اب باہر نکال لیا گیا ہے جبکہ پولیس قلعے میں کارروائی کر رہی ہے۔تاحال کسی گروہ یا فرد نے اس حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی۔اس حملے میں کم از کم نو افراد زخمی ہوئے ہیں اور بعض اطلاعات کے مطابق یہ تعداد کہیں زیادہ ہے۔
اردن حکام کا کہنا ہے کہ اس واقعے کا آغاز کرک کے قریب ایک گھر پر پولیس اور مسلح افراد کے مابین مقابلے سے شروع ہوا اور مسلح افراد گاڑی میں بھاگ کر شہر میں داخل ہوگئے۔اردن کی پبلک سکیورٹی ڈائریکٹوریٹ کا کہنا ہے کہ پولیس اور سکیورٹی فورسز نے قلعے کو گھیرے میں لے لیا ہے اور مسلح افراد کی تلاش کے لیے آپریشن کیا جارہا ہے۔تاحال واضح نہیں ہے ابھی بھی کتنے سیاح صلیبی جنگوں کے دور میں تعمیر کردہ اس قلعے کے اندر موجود ہیں اور قلعے کے اندر ہلاکتوں کی تعداد بھی واضح نہیں ہے۔
خیال رہے کہ عراق اور شام میں سرگرم شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ کے خلاف قائم اتحاد میں اردن امریکہ کا قریبی اتحادی ہے۔اس سے قبل دولت اسلامیہ کی جانب سے اردن کی سرحدوں کو ‘توڑ دینے’ کی دھمکی بھی دی جاچکی ہے۔جون میں شامی سرحد پر ایک ٹرک خودکش حملے میں چھ سکیورٹی اہلکار ہلاک ہوئے تھے اور اس کی ذمہ داری دولت اسلامیہ نے قبول کی تھی۔

یہ بھی دیکھیں

عالمی استکبار اسلام کے فروغ کی راہ میں رکاوٹ ہے : علی اکبر ولایتی

تہران: مجمع جہانی بیداری اسلامی کے سیکریٹری جنرل نے کہا ہے کہ عالمی استکبار امریکہ …