اتوار , 28 فروری 2021

بھارتی کا ایسا مزدور جو روزانہ ایک پلیٹ مٹی کھاجاتا ہے

20

اتر پردیش: کچھ انسانوں میں ایسی غیر معمولی صلاحیتیں موجود ہوتی ہیں جس کی بدولت وہ دنیا بھر کی توجہ حاصل کرلیتے ہیں اور ان ایسی صلاحیتوں سے لوگ حیرت زدہ بھی رہ جاتے ہیں جب کہ بھارت میں بھی ایک شخص عجیب طبعیت کا مالک ہے جو اینٹوں کے ٹکڑوں سمیت روزانہ ایک پلیٹ مٹی بھی کھاتا ہے۔
بھارت کے رہائشی 45 سالہ ہنس راج 20 سال کی عمر سے مٹی کھارہے ہیں اور انہیں اس کا ذائقہ بہت پسند ہے۔ ہنس راج کے مطابق مٹی میں موجود معدنیات سے وہ تندرست اور توانا رہتے ہیں، انہیں محلے والے ’’مٹی کا آدمی‘‘ کہتے ہیں جب کہ ڈاکٹروں کے مطابق انہیں ’’پیکا‘‘ کا مرض لاحق ہے جس میں کوئی شخص ناقابلِ تناول اشیا اور بے کار اشیا کھانے لگتا ہے، ایسے لوگو بسا اوقات لوگ خطرناک اور زہریلی اشیا بھی کھالیتےہیں لیکن ہنس راج کا کہنا ہےکہ اب تک انہوں نے کوئی خطرناک شے نہیں کھائی اور ان کا دعویٰ ہے کہ مٹی کھانے کے باوجود وہ کبھی کسی خاص بیماری یا تکلیف کا شکار نہیں ہوئے ہیں۔

ہنس راج کے مطابق شروع میں وہ دیوار چاٹتے تھے اور اس کے بعد پتھر اور اینٹوں کے ٹکڑے کھانے شروع کیے جب کہ اب وہ اسے معمول کا حصہ سمجھتے ہیں، ان کے دانت اتنے مضبوط ہیں کو وہ چھوٹے پتھروں کو چباکر توڑ دیتے ہیں۔ ہنس راج پیشے کے لحاظ سے مزدور ہیں اور مکان بناتے ہیں جب کہ اسی دوران وہ سارا دن مٹی کھاتے رہتے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

لاک ڈاؤن سے پریشان ہیں تو اپنی چیخ آئس لینڈ تک پہنچائیں!

آئس لینڈ سیاحوں کے لیے اپنی تشہیر کرتا رہتا ہے اور اب اسی مہم کے …