اتوار , 28 فروری 2021

چاکلیٹ میں محبت کے جذبے کو ابھارنے کی خوبی ہوتی ہے، ماہرین طب

38

نیویارک: کسی زمانے میں پھولوں کے تحفے کو ہی محبت کے اظہار کے اظہار کر ذریعہ سمجھا جاتا تھا اور لوگ اس کی خوشبو میں محبت کو تلاش کرتے تھے لیکن اب جدید دور میں چاکلیٹ کو بھی محبت کے اظہار کے لیے استعمال کیا جانے لگا ہے اور اب تو کچھ طبی ماہرین نے کہ دیا ہے کہ چاکلیٹ میں محبت کا نشہ سمویا ہوا ہے۔

39

چاکلیٹ کو تحفے میں دینے کا باقاعدہ رواج ویلٹنائن ڈے سے ہوا اور بالخصوص یورپ میں نوجوان اس موقع پر ایک دوسرے کو یہ تحفہ دے کر اپنے پیاروں کو اپنی محبت کی گہرائی کا احساس دلاتے ہیں جب کہ اب ایک امریکی ٹی وی کے طبی ماہر نے انکشاف کیا ہے کہ چاکلیٹ انسان کے اندر محبت کے جذبے کو ابھار دیتی ہے بلکہ ایسا صرف چاکلیٹ سے نہیں بلکہ اگر کسی نے پیار سے آپ کے لیے کوئی پسندیدہ میٹھی ڈش بنائی ہے تو اس کے کھانے سے بھی آپ کے جسم میں محبت کے بڑھنے کا کیمیائی رد عمل سامنے آتا ہے۔ طبی ماہر کا کہنا ہے کہ چاکلیٹ کسی بھی دوا کی طرح ہمارے دماغ کو خوش بنا سکتی ہے اور یہ آسان اور قدرتی طریقہ ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ چاکلیٹ میں محبت پیدا کرنے والا عنصر ’’فینائل لیتھلا مائن‘‘ موجود ہوتا ہے جو ہمارے دما غ میں محبت کے جذبات کو بڑھانے کا قدرتی طریقہ ہے۔

40

طبی ماہر کا کہنا ہے کہ چاکلیٹ کیمیائی طور پر تو دماغ میں محبت کے جذبات کو ابھارتی ہی ہے لیکن اس کے علاوہ کچھ اور طبی فوائد بھی اپنے اندر سمیٹے ہوئے ہے جس میں سب اہم یہ ہے کہ یہ یاداشت کو کو کمزور ہونے سے روکتی ہے۔ ہارورڈ میڈیکل اسکلو کی ایک تحقیق کے مطابق روزانہ 2 کپ گرم چاکلیٹ کے پینے سے ذہن صحت مند رہتا ہے اور بڑھاپے میں یادداشت کی کمی کو روکتی ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ اس کےعلاوہ چاکلیٹ دل کی بیماریوں، بلڈ پریشر کو کنٹرول کرنے، بھوک کو خاص لیول پر رکھنا اور بڑھاپے کو روکنے جیسی خوبیاں بھی رکھتا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

لاک ڈاؤن سے پریشان ہیں تو اپنی چیخ آئس لینڈ تک پہنچائیں!

آئس لینڈ سیاحوں کے لیے اپنی تشہیر کرتا رہتا ہے اور اب اسی مہم کے …