جمعہ , 26 فروری 2021

نیا نشہ آور مواد یورپی ملکوں میں اموات کی لہر کا موجب بنا ہے

2

یورپی اتحاد میں شمال ملکوں میں ایک سو سے زیادہ افراد، "فلاکا” نام کی نئے نشہ اور مواد کے استعمال کی وجہ سے مر چکے ہیں۔ یہ بہت سستا ہے مگر اس کا اثر مہلک ہو سکتا ہے۔

یورپی اتحاد میں شامل آٹھ ملکوں میں اس کے استعمال سے ایک سو سے زیادہ اموات اور دو سے کے قریب انتہائی نشے کا شکار لوگ سامنے آ چکے ہیں۔ "فلاکا” کی بڑھتی ہوئی مقبولیت اس کی قیمت بہت کم ہونے یعنی دو سے چار ڈالر اور اس کے قوی نفسیاتی اثرات کے سبب ہے۔

اس کا تھوڑی سی مقدار میں زیادہ استعمال حرکت قلب میں عدم آہنگی، جنون، دیوانگی اور جسم کے درجہ حرارت کو بہت زیادہ کر دینے کا موجب بنتا ہے۔ جنوب مشرقی ایشیا میں یہ مواد تیار کرنے والے تیزی سے اس کی ہئیت تبدیل کر دیتے ہیں جس کی وجہ سے قانون نافذ کرنے والے اداروں کے لیے نشے کی اس قسم کے خلاف لڑائی مشکل ہو جاتی ہے۔

فلاکا کے پھیلاؤ سے نہ صرف یورپی ملکوں میں تشویش ہے بلکہ امریکہ اور آسٹریلیا میں بھی تشویش پائی جاتی ہے۔ امریکہ میں فلاکا کے استعمال کے روزانہ بیس واقعات دیکھنے میں آ رہے ہیں۔ اسے استعمال کرنے والے بہت جارح ہو جاتے ہیں، ایسے شخص پر قابو پانے کے لیے چار یا چار سے زیادہ پولیس والے درکار ہوتے ہیں۔

 

یہ بھی دیکھیں

بیماری میں حتیٰ الامکان دوا سے پرہیز کیجئے!

اسلامی متون میں بکثرت ایسی احادیث اور روایات موجود ہیں جن میں یہ ہدایت کی …