پیر , 1 مارچ 2021

پاکستان’’ایک ہی کوچ‘‘ کی مدد سے فتح کا نسخہ تلاش کرے گا

16

کراچی: پاکستان ’’ایک ہی کوچ‘‘کی مدد سے فتح کا نسخہ تلاش کرے گا، چیئرمین پی سی بی شہریارخان نے مختصر طرز اور ٹیسٹ کیلیے علیحدہ کوچز کی تجویز مسترد کر دی۔
تفصیلات کے مطابق قومی کرکٹ ٹیم مسلسل ناقص کارکردگی کے سبب ون ڈے رینکنگ میں آٹھویں اور ٹی ٹوئنٹی میں ساتویں نمبر پر پہنچ چکی ہے،اس حوالے سے شہریارخان بھی تشویش میں مبتلا ہیں، البتہ انھوں نے مایوس ہونے کے بجائے مثبت خیالات کا اظہارکرتے ہوئے کہا کہ کوششیں یقینا جاری ہیں امید ہے کہ جلد بہتری آئیگی۔ وقار یونس کی کوچنگ میں شکستوں کے سبب بعض حلقوں کی جانب سے ٹیسٹ جبکہ ون ڈے و ٹی 20 کیلیے الگ کوچز کی تجویز بھی سامنے آئی ہے۔
البتہ چیئرمین کے مطابق یہ قابل عمل نہیں، ہم ایک ہی کوچ کو برقرار رکھیں گے،انھوں نے وقار یونس پر اظہار اعتماد کرتے ہوئے کہا کہ ہم دونوں کی بدھ کو لاہور میں ملاقات ہو رہی ہے، اس موقع پر ٹیم کی حالیہ کارکردگی سمیت ورلڈ ٹی 20 کی حکمت عملی پر تبادلہ خیال کریں گے، ایونٹ میں اب زیادہ وقت باقی نہیں رہا اس لیے اب تمام معاملات کو حتمی شکل دے دینی چاہیے۔
شہریار خان نے قومی ٹیم کی کوچنگ میں ویوین رچرڈز کے اظہار دلچسپی پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ سابق عظیم ویسٹ انڈین بیٹسمین پی ایس ایل میں عمدگی سے فرائض انجام دے رہے ہیں، ہم ضرور غور کریں گے کہ کس طرح پاکستان کرکٹ کیلیے ان کی خدمات سے استفادہ کیا جا سکتا ہے،واضح رہے کہ رچرڈز کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے مینٹور ہیں۔
نوجوان کھلاڑیوں کو ایونٹ میں ان سے بہت کچھ سیکھنے کا موقع مل رہا ہے۔ ورلڈ ٹی20میں قومی ٹیم کی شرکت کے حوالے سے چیئرمین پی سی بی نے کہا کہ ابھی تک ہمیں حکومت کی جانب سے دورئہ بھارت کی اجازت نہیں ملی، یہ فیصلہ اعلیٰ حکام کو ہی کرنا ہے، ہماری تیاریاں مکمل ہیں، امید ہے کہ آئندہ 3،4روز میں صورتحال واضح ہو جائے گی۔
شہریارخان نے کہا کہ میں شاہد آفریدی کی قیادت سے مطمئن ہوں، امید ہے کہ میگا ایونٹ میں قومی ٹیم اچھا کھیل پیش کرے گی، ہم نے سرفراز احمد کو نائب کپتان مقرر کیا ہوا ہے، انھیں بھی اہم ایونٹ میں شرکت سے تجربہ حاصل ہو گا جس سے مستقبل میں قیادت کرتے ہوئے مدد ملے گی۔
پی ایس ایل کے دوران وہاب ریاض اور احمد شہزاد کے الجھنے کو انھوں نے بدقسمتی قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایسا نہیں ہونا چاہیے تھا، مجھے اس واقعے پر بیحد افسوس ہوا، میچ ریفری نے اپنا کام کرتے ہوئے دونوں پر جرمانہ عائد کر دیا، بورڈ اب مزید کوئی کارروائی نہیں کرے گا۔ چیئرمین نے یو اے ای میں جاری پاکستان سپر لیگ پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یقیناً مستقبل میں میچز کا انعقاد ملک میں بھی کرایا جائے گا، ہمیں اپنے شائقین کی بے چینی کا اندازہ ہے، پی سی بھی چاہتا ہے کہ ملکی میدان ویران نہ رہیں بلکہ مسلسل مقابلوں کے انعقاد کا سلسلہ جاری رہے، امید ہے کہ جلد ایسا ہوگا۔

یہ بھی دیکھیں

پاکستان نے نیوزی لینڈ کو آخری ٹی ٹوئنٹی میں شکست دیدی

نیپئر: پاکستان نے تیسرے اور آخری ٹی ٹوئنٹی میچ میں نیوزی لینڈ کو 4 وکٹ …