جمعرات , 25 فروری 2021

جہلم میں ہاتھی کی قدیم نسل کی باقیات دریافت

e561084e9220383c7204eb40f9bc13f1_L

غیر ملکی خبر ایجنسی کے مطابق دریافت شدہ فوسل ہاتھیوں کی موجودہ نسل کے دور کے رشتے دار اسٹیگوڈان کا ہے جو کہ زمین ہر کم و بیش 11 لاکھ سال قبل پائے جاتے تھے اوراسے پنجاب یونیورسٹی کے شعبہ حیوانیات کے محققین نے دریافت کیا ہے۔

تحقیق کے مطابق ملنے والا فوسل ایک کھوپڑی ہے جو کہ 2 فٹ چوڑی اور 3 فٹ لمبی ہے اور اس کا وزن 120 کلو ہے جو کہ موجود ہاتھی کی کھوپڑی سے 90 گنا زیادہ وزنی ہے۔ڈاکٹر محمد اختر جو کہ اس تحقیق کے سربراہ ہیں کا کہنا ہے کہ اس دریافت سے نہ صرف ہاتھیوں کے ارتقاء کو سمجھنے میں مدد ملے گی بلکہ اس سے یہ بھی پتہ چلایا جاسکے گا کہ یہاں پر جانوروں کے رہنے کے لیئے کیسا ماحول تھا۔ لیڈ یورینیم اورکاربن ڈیٹنگ یہ وہ 2 طریقہ کار ہیں جن کے ذریعے اب اس کی تاریخ کو مزید پرکھا جائے گا۔واضح رہے کہ جہلم اور آزاد کشمیر میں قدیم ہاتھیوں، زرافوں ، اور دیگر ممالیہ جانوروں کی دریافت کی وجہ سے مشہور ہے اور یہ ارضیاتی سلسلہ سوالک کہلاتا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

لاک ڈاؤن سے پریشان ہیں تو اپنی چیخ آئس لینڈ تک پہنچائیں!

آئس لینڈ سیاحوں کے لیے اپنی تشہیر کرتا رہتا ہے اور اب اسی مہم کے …