اتوار , 15 دسمبر 2019

داعش میں شامل دو پاکستانی شخصیات گرفتار

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )مرکزی جمعیت اہل حدیث کے مشہورومعروف مناظراورمرکزی رہنماء ڈاکٹرپروفیسرطالب الرحمن بیٹے کی داعش میں شمولیت کے بعد سعودی عرب فرارہوئے جہاں منفی سرگرمیوں پرملوث ہونے پرسعودی پولیس نے بھائی سمیت انہیں دھرلیا ہے مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان کااہم وفدان کی رہائی کے لیے سعودی عرب پہنچ گیا پروفیسرطالب الرحمن کابیٹااسامہ گزشتہ سال داعش میں شمولیت کے بعد افغانستان چلاگیاتھا جہاں وہ چندماہ قبل ماراگیا۔
تفصیلات کے مطابق حکومت کی اتحادی جماعت مرکزی جمعیت اہل حدیث اس وقت ایک بڑے بحران کاشکارہے اس جماعت کے دواہم رہنماء سعودی عرب میں گرفتارہوگئے ہیںڈاکٹرطالب الرحمن کے بھائی پروفیسرطیب الرحمن نے اوصاف کے رابطہ کرنے پرتصدیق کی ہے کہ پروفیسرطالب الرحمن اورڈاکٹرتوصیف الرحمن کو سعودی دارالحکومت ریاض سے گرفتارکیاگیاہے ان کے ساتھ ڈاکٹرتوصیف الرحمن کاپندرہ سالہ بیٹااوردومہمان بھی گرفتارہوئے ہیں پروفیسرطیب الرحمن کاکہناہے کہ ابھی تک ہمیں یہ نہیں پتہ چل سکاہے کہ انہیں کیوں گرفتارکیاگیاہے۔
مرکزی جمعیت اہل حدیث کی مرکزی قیادت سینیٹرساجدمیرکی قیادت میں سعودی عرب پہنچ گئی ہے وہ معلومات حاصل کررہے ہیں ذرائع کے مطابق مرکزی جمعیت اہل حدیث راولپنڈی کے سرپرست اعلی ،مرکزی رہنماء ،جامع مسجدصفاسیٹلائٹ ٹائون کے خطیب اورمعروف اہل حدیث مناظرڈاکٹرپروفیسرطالب الرحمن کابیٹااسامہ گزشتہ سال پاکستان سے غائب ہوا اورحسا س اداروں نے اس وقت اس کی فون کال ٹریس کی جب اسامہ نے افغانستان سے اپنے گھرفون کیا جس کے بعد حساس اداروں نے کاروائی کرتے ہوئے ڈاکٹرطالب الرحمن کوگرفتارکرکے پوچھ گچھ شروع کی تواس دوران طالب الرحمن کودل کادورہ پڑا اورایک سرکاری ہسپتال میں اس کاعلاج کروایاگیا ذرائع کاکہناہے کہ ڈاکٹرطالب الرحمن حساس اداروں کویہ یقین دہانی کرواکے رہاہوئے تھے کہ ان کااپنے بیٹے سے کسی قسم کاکوئی تعلق نہیں ہے رہائی کے بعد ڈاکٹرطالب الرحمن سعودی عرب چلے گئے جہاں ان کادوسرابیٹا زیرتعلیم ہے اوربڑابھائی ڈاکٹرتوصیف الرحمن ایک یونیورسٹی میں ملازم ہے۔

ذرائع سے معلوم ہواہے کہ سعودی وزار ت داخلہ نے ڈاکٹرطالب الرحمن اورڈاکٹرتوصیف الرحمن کوچنددن قبل گرفتارکرلیاہے اس گرفتاری سے متعلق معلوم ہواہے کہ دونوں بھائیوں نے سعودی عرب میں امریکیوں سے ملاقاتیں کی تھیں اورکچھ منفی سرگرمیوں میں ملوث پائے گئے تھے ان کی گرفتاری کاسنتے ہی مرکزی جمعیت اہل حدیث کی مرکزی قیادت سینیٹرپروفیسرساجدمیر،قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے مذہبی امورکے چیئرمین حافظ عبدالکریم اوراسلامی نظریاتی کونسل کے رکن علامہ علی محمدابوتراب سعودی عرب پہنچ گئی ہے دودن قبل انہوں نے سعودی وزیرمذہبی امورشیخ صالح بن عبدالعزیزال شیخ سے ملاقات کی ہے اوردونوں بھائیوں کی رہائی کے حوالے سے بات چیت کی ہے۔
ذرائع کاکہناہے کہ سعودی وزارت داخلہ نے مکمل تحقیقات سے قبل رہائی سے انکارکردیاہے ذرائع کے مطابق پروفیسرطالب الرحمن کابیٹااسامہ جوداعش میں شامل ہواتھا وہ افغانستان میں چندماہ قبل ماراگیاہے واضح رہے کہ پروفیسرطالب الرحمن کاتعلق خانیوال سے ہے اوروہ اہل حدیث مسلک کے چوٹی کے مناظرہیں پاکستان میں مخالف مسالک کے خلاف تقاریرکی وجہ سے وہ متنازعہ رہے ہیں وہ کئی کتابوں کے مصنف ہیں اورشعلہ بیان خطیب بھی ہیں ۔

یہ بھی دیکھیں

لاکھوں ڈالر لوٹنے والی سابق سوڈانی خاتون اول وداد بابکر سلاخوں کے پیچھے

  دبئی: سوڈان کی سابق خاتون اول وداد با بکر کو گرفتار کرنے کے بعد …