منگل , 9 مارچ 2021

ایشیا کپ میں پاکستان اپنا دوسرا میچ آج متحدہ عرب امارات کے خلاف کھیلے گا

461193-final-1456699821-197-640x480

ڈھاکا: ایشیا کپ میں پاکستان اپنا دوسرا میچ آج متحدہ عرب امارات کے خلاف کھیلے گا، زخم خوردہ گرین شرٹس اپنا غصہ ’بچوں‘ پر نکالنے کو بے چین ہیں، بیٹسمینوں نے ناتجربہ کار ٹیم کے خلاف غفلت کی نیند سوئی فارم کو جگانے کی ٹھان لی۔
فتح کی صورت میں بھارتی ٹیم کے ہاتھوں ناکامی کا غم بھی غلط ہوجائے گا، خرم منظور کی جگہ عماد وسیم کو مل سکتی ہے، چار فاسٹ بولرز کے ساتھ کھیلنے کی حکمت عملی برقرار رہنے پر محمد نواز کا انتظار طویل ہوجائے گا، آل راؤنڈر شعیب ملک کہتے ہیں کہ پہلے میچ میں کنڈیشنز سے ناواقفیت لے ڈوبی، غلطیوں سے سیکھیں گے۔ دوسری جانب یواے ای بھی مین راؤنڈ میں فتح کی تلاش میں سرگرداں ہے، سری لنکا اور بنگلہ دیش دونوں کے خلاف میچز میں اسے بھی بیٹنگ لائن نے ہی دھوکا دیا، ہیڈ کوچ عاقب جاوید کہتے ہیں کہ ہمیں اپنی ٹیم سے بہتر کھیل کی توقع ہے۔
ایشیا کپ کے آغاز پر بھارتی ٹیم کے ہاتھوں شکست نے پی ایس ایل کھیل کر بنگلہ دیش پہنچنے والے پاکستانی کھلاڑیوں کے چودہ طبق روشن کردیے، جس کی وجہ سے اب اسے فائنل کھیلنے کے لیے اپنے باقی تمام میچز میں لازمی فتح درکار ہے، اس کی خوش قسمتی ہے کہ منہ کے بل گرنے کے بعد اسے فوری طور پر آج یو اے ای سے میچ کی صورت میں سنبھلنے کا موقع میسر آگیا ہے۔
ایسوسی ایٹ ٹیم پر طبع آزمائی سے بیٹسمینوں کو فارم میں واپسی کا موقع مل سکتا جوکہ بنگلہ دیش اور سری لنکا کے خلاف میچزکے لیے اہم ثابت ہوسکتا ہے۔ گرین شرٹس کی جانب سے چار فاسٹ بولرز میدان میں اتارنے کی حکمت عملی برقرار رکھے جانے کا امکان ہے، اس لیے محمد نواز کو الیون کا حصہ بننے کے لیے مزید انتظار کرنا ہوگا تاہم مڈل آرڈر کو مستحکم کرنے کے لیے خرم منظور کی جگہ عماد وسیم کو کھلایا جاسکتا ہے جن کی لیفٹ آرم اسپن صلاحیتیں بھی ٹیم کے کام آسکتی ہیں۔
اتوار کو پاکستانی ٹیم نے ڈھاکا میں پریکٹس کرتے ہوئے اپنی خامیوں پر قابو پانے کی کوشش کی۔ اس موقع پر میڈیا سے بات چیت میں شعیب ملک نے کہا کہ بھارت سے میچ میں بیٹنگ بہت مشکل تھی، ہمیں کنڈیشنز کا کوئی اندازہ ہی نہیں تھا، یہ کوئی عام ٹوئنٹی 20 وکٹ نہیں تھی جس پر 170، 180 رنز بنتے، ہم اپنی غلطیوں سے سیکھیں گے، یہی وجہ ہے کہ ہم یہاں پر پریکٹس کررہے ہیں۔
دوسری جانب کوالیفائنگ راؤنڈ میں ناقابل شکست رہ کر مین راؤنڈ میں پہنچنے والی یو اے ای ٹیم کی بولنگ سری لنکا اور بنگلہ دیش کے خلاف متاثر کن رہی مگر دونوں بار بیٹسمین ذمہ داری ادا نہیں کرپائے، جس کی وجہ سے ناکامی کا منہ دیکھنا پڑا۔ ہیڈ کوچ عاقب جاوید کہتے ہیں کہ ہمیں اپنی ٹیم سے اچھی کارکردگی کی توقع ہے مگر پاکستانی اٹیک کا سامنا کرنا بھی آسان نہیں ہوگا۔
واضح رہے کہ پاکستان اور یو اے ای پہلی مرتبہ ٹوئنٹی 20 میں ایک دوسرے کے مدمقابل آرہے ہیں، اس سے قبل دونوں ٹیموں میں تین ون ڈے میچز بالترتیب 1994، 1996 اور 2015 میں کھیلے جاچکے ہیں۔ شاہد آفریدی نے اب تک 85 ٹی 20 اننگز میں66 چھکے جڑے ہیں، تین مزید سکسرز سے وہ ڈیوڈ وارنر (67) اور مارٹن گپٹل (68) کو پیچھے چھوڑتے ہوئے آل ٹائم لسٹ میں چوتھے نمبر پر پہنچ جائیں گے۔

یہ بھی دیکھیں

پاکستان نے نیوزی لینڈ کو آخری ٹی ٹوئنٹی میں شکست دیدی

نیپئر: پاکستان نے تیسرے اور آخری ٹی ٹوئنٹی میچ میں نیوزی لینڈ کو 4 وکٹ …