اتوار , 7 مارچ 2021

نادرا کا کمال:کراچی کا 131 سال کا نوجوان

کراچی: نیشنل ڈیٹا بیس رجسٹریشن اتھارٹی (نادرا) نے کراچی کے 31 سالہ نوجوان کو 131 سال کا بنا دیا۔

کراچی کے رہائشی سلیم میمن کو نادرا نے 9 ماہ رواں برس قبل مارچ میں شناختی کارڈ جاری کیا تھا۔

شناختی کارڈ کے مطابق نوجوان سلیم کی تاریخ پیدائش 3 ستمبر 1884 درج کی گئی ہے جبکہ سلیم کی اصل تاریخ پیدائش 3 ستمبر 1984 ہے، یوں 31 سال کے نوجوان کی عمر اس کے شناختی کارڈ کے مطابق 131 سال ہو گئی ہے۔

سلیم میمن کو جاری شناختی کارڈ پر اجراء کی تاریخ یکم مارچ 2015 کو جاری کیا گیا تھا جبکہ اس تاریخ تنسیخ کے سامنے تاحیات تحریر کیا گیا ہے۔

سلیم میمن نے کہا ہے کہ وہ نادرا کے دفاتر کے چکر لگا لگا کر تھک گیا لیکن غلطی درست نہیں کی جا رہی۔

سلیم میمن نے یہ بھی بتایا کہ شناختی کارڈ پر یہ غلطی نادرا عائشہ منزل برانچ سے ہوئی لیکن برانچ نے ان کو ہیڈ آفس بھیج دیا، ہیڈ آفس جانے پر وہاں سے معلوم ہوا کہ یہ غلطی عائشہ منزل برانچ سے ہی ٹھیک ہو گی اب سمجھ نہیں آ رہا کہ کیا کیا جائے۔

واضح رہے کہ نادرا کا قیام سابق فوجی حکمران جنرل پرویز مشرف کے دور میں 2000 میں عمل میں آیا تھا ، نادرا کے آرڈیننس 2000ء کے سیکشن 9(1) کے تحت نادرا پاکستان کے ہر ایک شہری جس کی عمر 18 سالہ ہو، چاہے وہ ملک میں ہو یا بیرون ملک مقیم اس کو رجسٹرڈ کرنے کا پابند ہے۔

نادرا کی جانب سے اس عمل کے دوران بہت سی خامیاں دیکھنے میں آئیں مگر شناختی کارڈ پر ہونے والی معمولی غلطیوں کی درستی کے لیے ہمیشہ پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے، کیونکہ ان غلطیوں کی درستی کی صورت میں ملازمین کی نشاندہی ہوتی ہے کہ انہوں نے یہ غلطی کی ہے۔

واضح رہے کہ نادرا نے رواں برس ایک لاکھ افراد کے شناختی کارڈ بلاک کر دیئے تھے جن کے بارے میں کہا گیا تھا کہ وہ تمام افراد پاکستانی نہیں ہیں بلکہ افغانی ہیں مگر بعد میں کئی پاکستانی افراد کی نشاندہی ہوئی جن کے شناختی کارڈ بلاک کیے گئے تھے۔

یہ بھی دیکھیں

فلسطین کی آزادی اور اسرائیل کا خاتمہ، پاکستانی قوم کی خواہش

حماس کے رہنما اسمٰعیل ہنیہ نے کہا ہے کہ پاکستان نے ہمیشہ فلسطین کی حمایت …