منگل , 9 مارچ 2021

دھشتگردی سے نمٹنے کے لیے مسجدوں میں مسلمانوں کی نقل و حرکت پر نظر رکھنے کا اعلان

امریکی کانگریس کے ایک ریپبلکن رکن نے کہا ہے کہ ملک میں دہشت گردی کے خلاف جنگ کا واحد راستہ مسجدوں میں مسلمانوں کی نقل و حرکت پر نظر رکھنا ہے-

as13

امریکی کانگریس میں دہشت گردی مخالف کمیٹی کے سربراہ پیٹر کینگ نے بدھ کو فاکس نیوز کو انٹرویو دیتے ہوئے امریکی معاشرے کے مسلم رہنماؤں پر پولیس اور سیکورٹی اہلکاروں کے ساتھ تعاون نہ کرنے کا الزام لگایا اور کہا کہ ان کی نظر میں دہشت گردی کے ہر طرح کے خطرے کو روکنے کے لئے مسلمانوں سے قریبی تعلقات قائم کرنے کے ساتھ ہی سیکورٹی حکام کو ان کی تمام سرگرمیوں خاص طور سے مسجدوں پر گہری نظر رکھنی چاہئے-

ریاست نیویارک کے اس ممبر پارلیمنٹ نے جو اسلاموفوبیا پھیلانے میں پیش پیش رہتے ہیں، دعوی کیا کہ ماضی میں بھی پولیس اور مسلم معاشرے کے رہنماؤں کے درمیان قریبی تعلقات ہونے کے باوجود مسجدوں کے ذمہ داران اور ائمہ جمعہ کچھ لوگوں کی مشکوک سرگرمیوں کے بارے میں سیکورٹی اہلکاروں کو اطلاعات فراہم کرنے سے گریز کرتے رہے ہیں اس لئے مسلمانوں کے درمیان جاسوسوں کو تعینات کرنا ضروری ہے جس سے ملک میں دہشت گردانہ سازشوں کو ناکام بنانے میں مدد مل سکے-

پیٹر کینگ اس سے قبل بھی کئی بار امریکی مسلمانوں پر حملے کر چکے ہیں اور ان کا دعوی ہے کہ مساجد، دہشت گردوں اور انتہاپسندوں کے محفوظ ٹھکانے ہیں اور اسی فیصد مسجدوں کے انتظامی امور انتہاپسندوں کے ہاتھ میں ہیں-

یہ بھی دیکھیں

شام پر حملہ کرنے والے اسرائیلی میزائل تباہ

شامی فوج نے صوبہ حماہ کی فضا میں اسرائیل کے میزائلی حملوں کو ناکام بنا …