منگل , 21 فروری 2017

مصری صدر عبدالفتاح السیسی کی زندگی کا مختصر جائزہ

تاریخ پیدائش: 19نومبر 1954ء
جائے پیدائش: مصری دارالحکومت قاہرہ
پورانام: عبدالفتاح سید حسین خلیل السیسی
والد کا نام : سید حسن السیسی (دکان دار تھے)
والدہ کا نام: سُعاد محمد
شریکی حیات : انتصار عمرو(1977۔تاحال)
بچے : مصطفیٰ،محمود،حسن اور آیت(بیٹی)
تعلیم : مصری ملٹری اکیڈمی 1977
مصری کمانڈر اینڈسٹاف کالج 1987
جوئنٹ کمانڈاینڈ سٹاف کالج برطانیہ 1992
جمال عبدالناصر ملٹری سائنس اکیڈمی ۔مصر 2003ء
امریکی آرمی وار کالج پنسلوینیا۔امریکہ 2006ء
دیگر حقائق:
۱۔ مصری ملٹری اکیڈمی سے فارغ التحصیل ہونے کے بعد سیسی نے فوج بطور انفینڑی (فوجی ) خدمات سر انجام دینا شروع کیا اور رفتہ رفتہ میکانیکل دستے کی قیادت سنبھال لی ،اور پھر مصر کی شمالی فوجی علاقے کی کمانڈ سنبھال لی۔
۲۔ سابق مصری صدر حسنی مبارک کے دور حکومت میں سیسی نے سعودی عرب میں بھی عسکری فرائض سر انجام دئیے۔
عملی زندگی :
فروری 2011ء: حسن مبارک کی معزول کے بعد، سیسی کو ملٹری انٹیلی جنس کےڈائریکٹر کے عہدے پر مقرر کیا گیا،علاقہ ازیں سیسی مصر کی سپریم کونسل آف آرمڈ فورسز کے سب سے کم عمررکن بن گئے،جوکہ ایک عبوری فوجی اتھارٹی تھی اور اعلیٰ فوجی رہنمائوں پر مشتمل تھی۔
12اگست2012ء: سابق مصری محمد مرسی عبدالفتاح سیسی کو وزیر دفاع اور مسلح افواج کے کمانڈر اِن چیف مقرر کرتے ہیں۔
یکم جولائی 2013ء: مصر میں بڑے پیمانے پر مظاہروں کے بعد، سیسی مرسی کی حکومت کو مصری فوج کا پیغام پہنچاتے ہیں کہ حکومت کے پاس ملک امن بحال کرنے اور عوام کے مطالبات ماننے کے لیے 48گھنٹوں کا وقت ہے جسکے بعد ملک میں امن کی بحالی کیلئے فوج مداخلت کریگی ۔۔۔الٹی میٹم کو بغاوت کا اعلان تصور نہیں کیا جائے۔
3جولائی 2013ء: فوجی الٹی میٹم گزرنے کے بعد مصری افواج صدر محمد مرسی کو معزول کرتے ہوئے انہیں انکی رہائش گاہ میں نظر بندکردیتے ہیں۔ مصری عوام سے ٹیلی ویژن پر خطاب کرتے ہوئے سیسی اعلان کرتے ہیں کہ مرسی مصری عوام کی توقعات پر پورا نہیںاترے اور ناہی مصری افواج کا مطالبہ پورا کرسکے کہ حکومت آپوزیشن جماعتوں کیساتھ ملکر کریں۔علاوہ ازیں سیسی عدلی منصوربطور قائم مقام صدر متعارف کرواتے ہیں۔
16جولائی 2013ء: سیسی کا وزیر دفاع اور آرمی چیف کے عہدوں میں بحالی کیساتھ انہیں ڈپٹی وزیراعظم کا عہدہ بھی دیدیا جاتا ہے۔
جنوری 2014ء: سیسی فیلڈمارشل مقرر کریئے جاتے ہیں۔
26مارچ 2014ء: سیسی اپنے فوجی عہدے سے استعفیٰ دیتے ہوئے مصر کے صدارتی انتخابات میں حصہ لینے کا اعلان کردیتے ہیں۔
5مئی 2014ء: سیسی ایک انٹرویومیں قسم کھاتے ہیں کہ اگر وہ مصری صدرمنتخب ہوتے ہیں تووہ اخوان المسلمین کا خاتمہ کردینگے۔
3جون 2014ء: سیسی مصری صدارتی انتخابات میں کامیاب قرار پائے جاتے ہیں انہوں نے انتخابات میں 96فیصدووٹ حاصل کیا تھا۔
8جون 2014ء: سیسی مصر کے صدر بن جاتے ہیں۔
22فروری 2015ء: عرب دنیا میں بڑھتے ہوئے خطرات کو دیکھتے ہوئے سیسی علاقے میں متحدہ عرب فورس کے قیام کو ضروری قرار دیتے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

صہیونیت کے زیر قیادت یمن پر جارحیت جاری

صہیونیت کے زیر قیادت یمن پر جارحیت جاری

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے