اتوار , 26 فروری 2017

حماس نے ترک وزیر اعظم کے بیان کی تنقید کر دی

غزہ(مانیٹرنگ ڈیسک ) ترکی کے وزیر اعظم بن علی ییلدریم نے مقبوضہ بیت المقدس میں شدت پسندانہ کاروائی کی مذمت کی تھی جس پر فلسطین کی اسلامی مزاحمتی تحریک حماس کی جانب سے شدید رد عمل سامنے آیا ہے۔حماس نے ترک وزیر اعظم بن علی ییلدریم اور ان کے نائب محمد شیمشک کے بیت المقدس میں شدت پسندانہ کاروائی کے بارے میں موقف کی مذمت کی ہے۔
حماس کے ترجمان حازم قاسم نے الرسالہ ویب سایٹ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ فلسطینی قوم اپنی سرزمین پر جو مزاحمت کر رہی ہے وہ جائز ہے اور بین الاقوامی قوانین کے مطابق ہے۔ حازم قاسم نے کہا کہ حقیقی دہشت گردی وہ چیز ہے جو غاصب ہماری قوم کے خلاف انجام دے رہے ہیں اور وہ قتل عام بھی دہشت گردی کے زمرے میں آتا ہے جو فلسطینیوں کے خلاف انجام دیا جا رہا ہے۔
انہوں نے آخر میں تاکید کی کہ حماس، فلسطینی امنگوں کے بارے میں ترکی کی حکومت اور عوام کے موقف اور غزہ کا محاصرہ ختم کرانے کی کوششوں کی قدردانی کرتا ہے۔ واضح رہے کہ ترکی کے وزیر اعظم بن علی ییلدریم نے اتوار کو بیت المقدس میں ہونے والی شدت پسندانہ کاروائی کی مذمت کی تھی۔ اس کاروائی میں چار صیہونی فوجی ہلاک اور 15 دیگر زخمی ہوئے تھے۔

یہ بھی دیکھیں

مسئلہ فلسطین کے حل کیلئے امریکہ کی حمایت حاصل کرنے والے افراد غلطی کر رہے ہیں: آیت اللہ آملی لاریجانی

تہران (مانیٹرنگ ڈیسک )اسلامی جمہوریہ ایران کے چیف جسٹس نے مسئلہ فلسطین کا راہ حل ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے