ہفتہ , 27 نومبر 2021

پی ٹی آئی کے 10 ماہ ، مہنگائی میں کتنا اضافہ ہوا؟

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)پاکستان تحریک انصاف نے اگست 2018 میں اقتدار سنبھالا تھا، ان 10 ماہ میں ملک میں مہنگائی کی شرح میں انتہائی اضافہ ہوا جس کی بڑی وجہ ڈالر کی قیمت میں مسلسل اضافہ ہے۔اگست 2018 سے مئی 2019 تک بجلی، گیس ، پیٹرول اور ڈیزل کی قیمت میں اضافہ اور روپے کی قدر میں کمی نے مہنگائی کو ڈبل ڈجٹ کے قریب پہنچا دیا اور متعدد اشیائے ضروریہ مہنگی ہو گئیں۔

اگر حکومت کے پہلے 10 ماہ میں مہنگائی کی شرح میں اضافے کا جائزہ لیا جائے توجب پی ٹی آئی حکومت نے اقتدار سنبھالا مہنگائی 5.8 فیصد کی سطح پر تھی جو مئی 2019 تک دس ماہ میں 9.1 فیصد تک پہنچ گئی۔اگست 2018 میں دس کلو آٹے کا تھیلا 386 روپے کا تھا جو دس ماہ بعد 26 روپے اضافے کے ساتھ 412 روپے تک پہنچ گیا ہے۔

اگست 2018 میں گائے کا گوشت 439 روپے کلو تھا جو مئی 2019 تک 484 روپے کلو تک پہنچ گیا۔ جبکہ بکرے کے گوشت کی قیمت کی قیمت 56 روپے کلو اضافے کے ساتھ 920 سے بڑھ کر 976 روپے ہو گئی۔اس کے ساتھ ساتھ سب سے زیادہ کھائی جانے والی مرغی کی قیمت بھی اس مدت میں 51 روپے فی کلو اضافے کے بعد 126سے 177 تک پہنچ گئی۔

ڈھائی کلو کوکنگ آئل والا ڈبا 10 ماہ قبل 485 روپے کا تھا جو 50 روپے مہنگا ہوکر 535 روپے کا ہوگیا۔ڈھائی کلو گھی کی قیمت بھی 480 سے 505 تک پہنچ گئی۔ کھلا گھی بھی 8 روپے اضافے کے ساتھ 154 روپے کلو سے بڑھ کر 162 روپے ہوگیا۔حکومت کے پہلے 10 ماہ میں دال مسور 129 سے 134 ، دال مونگ 129 سے 161، دال ماش 156 سے 168 روپےجبکہ دال چنا 134 سے 143 تک جا پہنچی۔

مہنگائی کی اس دوڑ میں چینی ، پتی اور خشک دودھ بھی پیچھے نہیں رہے۔ 10 ماہ قبل 60 روپے میں ملنے والی چینی 72 روپے فی کلو سے تجاوز کرگئی۔ 200 گرام چائے کی قیمت 205 روپے تھی جو اب بڑھ کر 221 روپے ہو چکی ہے۔ 400 گرام خشک دودھ بھی 390 روپے سے چھلانگ لگا کر 410 روپے پر جا پہنچا ہے۔اس مدت میں ڈالر کی قیمت 124 روپے تھی جو اب 164 روپے کا ہوچکا ہے۔

دوسری جانب گزشتہ روز زیر اعظم عمران خان نے بھی نوٹس لیتے ہوئے بدعنوانی، ذخیرہ اندوزی اور مہنگائی کیخلاف سخت کارروائی کی ہدایت کرتے ہوئے حکم دیا کہ پرائس مارکیٹ کمیٹیوں کو مزید فعال بنایا جائے۔

یہ بھی دیکھیں

توانائی کے بحران میں حکومت کا نئے ایل این جی ٹرمینل کی طرف جھکاؤ

اسلام آباد: بظاہر لگتا پے کہ حکومت نے موجودہ ایل این جی ٹرمینل کی مرمت …