اتوار , 28 نومبر 2021

کابل میں کشمیر ڈے منانے پر پابندی۔ کون ہے یہ لوگ۔۔؟

افغان حکومت مودی سرکار کی خوشنودی میں اندھی ہوگئی، کشمیریوں کے حق میں کل یکجہتی پروگرام دباؤ ڈال کر منسوخ کرانے کی کوشش کرنے لگی۔پاکستانی سفارت خانہ کابل کی جانب سے کل مقامی ہوٹل میں کشمیر ڈے منایا جانا تھا، جبکہ افغان حکومت ہوٹل انتظامیہ پر دباؤ ڈال کر کشمیریوں کے حق میں یکجہتی پروگرام منسوخ کرانا چاہتی ہے۔ہوٹل انتظامیہ نے افغان عہدیداروں کا ذکر کرتے ہوئے ہوٹل مذکورہ پروگرام کے لیے دینے سے انکار کردیا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ افغان عہدیدار کشمیر پروگرام منسوخ کرانے کے لیے ہوٹل انتظامیہ پر دباؤ ڈال رہے ہیں۔ خیال رہے کہ گزشتہ سال بھی افغان حکومت نے کشمیر بلیک ڈے کے مہمانوں کو ہراساں کیا تھا۔

یاد رہے کہ گزشتہ سال اکتوبر میں یوم سیاہ کشمیر سے متعلق سفارت خانے میں تقریب کا انعقاد کیا گیا تھا جس میں سفارت کار، سیاسی عمائدین اور دیگر اہم شخصیات نے شرکت کرنا تھی،تاہم تقریب سے 2 گھنٹے قبل سفارت خانے کے باہر مظاہرہ کیا گیا، اور مہمانوں کو ہراساں کرنے کی کوشش کی گئی۔یوم سیاہ کی تقریب روکنے کی کوشش، افغان حکومت بھارت نوازی میں اندھیپاکستانی سفیر کا کہنا تھا سفارت خانے کے باہر جمع ہونے والے مظاہرین نے پاکستان مخالف نعرے لگائے،مظاہرے کے باعث مہمان سفارت خانے نہیں پہنچ سکے،مہمانوں کو ڈنڈا بردار مظاہرین دھمکاتے بھی رہے۔

یہ بھی دیکھیں

لبنان کو ایرانی تیل کی ترسیل کا سلسلہ جاری

تہران: ایرانی ایندھن کا حامل ایک اور کاروان شام کے راستے لبنان میں داخل ہو …