اتوار , 20 جون 2021

کروشیا میں طاقتور زلزلے سے زگریب لرز اٹھا

کروشیا کے دارالحکومت ، زگرب کے شمال میں ایک طاقتور زلزلہ آیا ہے ، جس سے عمارتوں کو نقصان پہنچا ہے ، ملبے میں کئی گاڑیاں دفن ہوگئی ہے اور متعدد میں آگ لگی ہے۔ذرائع کا کہنا ہے زگرب کے اس پار متعدد مقامات پر فائر فائٹنگ اور ریسکیو آپریشن جاری ہے ، خبر رساں اداروں نے اطلاع دی کہ ایک 15 سالہ بچی کی حالت تشویشناک ہے اور دیگر زخمی ہوئے ہیں۔جی ایف زیڈ جرمن ریسرچ سنٹر برائے جیوسینس نے بتایا ہے کہ زلزلہ ، جو مغربی بلقان کے پار محسوس کیا گیا ، 10 کلومیٹر (چھ میل) کی گہرائی میں آیا۔  ابتدائی طور پر اس زلزلے کی شدت ریکٹر سکیل پر  5.4 تھی۔عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ، "یہ 10 سیکنڈ سے زیادہ عرصہ تک جاری رہا۔ میں نے اب تک کا سب سے مضبوط ترین تجربہ کیا ہے۔”
امریکی جیولوجیکل سروے نے بتایا کہ زلزلے کی شدت 5.4 ریکارڈ کی گئی ، جبکہ یوروپی بحیرہ روم کے سیسمولوجیکل سنٹر (ای ایم ایس سی) میں بھی 5.3 شدت ریکارڈ کی گئی ، جس کے بعد ایک اور شدت 5.1 ریکارڈ کیا گیا۔وزیر اعظم آندرج پلینکووچ نے کہا کہ زگرب میں گذشتہ 140 برسوں میں یہ زلزلہ سب سے بڑا تھا۔اس نے شہر کے مشہور گرجا گھر کو بھی بڑے پیمانے پر نقصان پہنچایا ، جس میں اس کے دو اسپائرز میں سے ایک کے سب سے اوپر کے ساتھ ٹکراؤ پڑا ہے – یہ سب جزوی طور پر کورونویرس لاک ڈاؤن کے درمیان ہیں۔
ذرائع کے مطابق اس شدید زلزلے کے باعث شہر کی گلیاں ملبے تلے دبے ہوئی ہے کنکریٹ کے سلیب کاروں پر گر پڑے اور چمنی دروازوں کے سامنے آگئے۔
منظر سے ملنے والی فوٹیج میں دکھایا گیا ہے کہ شب برگ میں ملبوس ماؤں نے اپنے نوزائیدہ بچوں کو کار پارک میں گلے لگایا تھا۔خواتین ، نوزائیدہ بچوں اور انکیوبیٹرز کو فوج کی مدد سے ایک نئی جگہ منتقل کیا جارہا تھا۔زگریب میں ، لوگ اپارٹمنٹ چھوڑ کر سڑکوں پر نکل آئے جبکہ دارالحکومت کے کچھ حصوں میں بجلی کی کمی کا سامنا کرنا پڑا۔ رائٹرز نیوز ایجنسی کی خبر کے مطابق ، چرچ کے بیل ٹاور کو نقصان پہنچا اور کچھ عمارتیں گر گئیں۔متعدد آگ کی اطلاع بھی ملی ہے۔ رہائشیوں نے گھروں کے اندر سامان کی شیلف گرنے ، ٹوٹی بوتلیں اور شیشے گرنے کی تصاویر شیئر کیں۔

یہ بھی دیکھیں

کابل میں پھر دھماکے، آٹھ افراد جاں بحق، شیعہ ہزارہ نشانے پر

کابل: افغانستان کے دارالحکومت میں جمعرات کو ہونے والے دو الگ الگ بم دھماکوں میں …